۷ مرداد ۱۴۰۰ | Jul 29, 2021
مولانا راجانی حسن علی روحانی

حوزہ/ کابل حملہ کسی نے بھی کیا ہو، چاہے داعش ہو یا طالبان لیکن اس کی پس پشت اسرائیل کا ہی ہاتھ ہے۔ چونکہ جمعۃ الوداع پر پوری دنیا کے شیعہ لوگوں نے فلسطین کے حق میں اسرائیل کی مخالفت میں احتجاج کیا تھا اس لئے اسرائیلوں نے افغانستان کے کابل شہر کے سید الشیداء اسکول پر معصوم بچیوں کو نشانہ بنایا ہے ۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، افغانستان کے دارالحکومت میں ایک اسکول پر تین راکٹ داغے گئے جس کے نتیجے میں 50 طالبات سمیت75 افراد جاں بحق اور 50 سے زائد زخمی ہوگئے ہیں اس حملے کی ہندوستان کی راجدھانی نئی دہلی سے مولانا راجانی حسن علی روحانی نے سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاکہ یہ حملہ کسی نے بھی کیا ہو چاہے داعش ہو یا طالبان لیکن اس کی پس پشت اسرائیل کا ہی ہاتھ ہے ۔ چونکہ جمعۃ الوداع پر پوری دنیا کے شیعہ لوگوں نے فلسطین کے حق میں اسرائیل کی مخالفت میں احتجاج کیا تھا اس لئے اسرائیلوں نے افغانستان کے کابل شہر کے سید الشیداء اسکول پر معصوم بچیوں کو نشانہ بنایا ہے ۔

مولانا راجانی حسن علی روحانی نے یہ بھی کہاکہ دنیامیں جتنے بھی لوگ ترم خان یا اپنے کو رستم سمجھتے ہیں وہ سارے کے سارے غریب شیعوں ہی کو مارکر سوچتے ہیکہ ہم نے اسلام اور دنیا فتح کر لی ہیں۔

مولانا نے کہاکہ دنیا بھر میں شیعہ حضرات دوہری چکی سے پیستے ہیں۔ ایک طرف اس کو مسلمان بھی مارتا ہے اور دوسری طرف غیر مسلم بھی مسلمانوں پر کا غصہ اتارنے میں شیعہ مسلمانوں کو ہی نشانہ بناتا ہے اور جس کی موجودہ مثال میں افغانستان ہیں جہاں آئے دن شیعہ حضرات مارے جاتے ہیں تو دوسرے افغانستان کے بورڈر کا پاکستان کا ہزارہ علاقہ میں بھی آئے دن شیعہ حضرات مارے جاتے ہیں۔

آخر میں مولانا راجانی نے مسلمان حکمراں اور یہودیوں اور عیسائیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اگر تم میں ہمت ہے اور تم ایک دوسرے کے دشمن ہو تو سب خود ہی آپس میں ہی کیوں نہیں نمٹ لیتے ہو اور کیوں سب لوگ اپنا غصہ کمزور شیعہ پر ہی اتارتے ہو۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
9 + 2 =