۴ تیر ۱۴۰۰ | Jun 25, 2021
سید حسن نصر اللہ

حوزہ/ صہیونی حکومت نے حزب اللہ اور اسرائیل کے درمیان ہونے والی جنگ کی 15 ویں برسی کے موقع پر لبنانی حزب اللہ کے سکریٹری جنرل کے ریمارکس پر ردعمل کا اظہار کیا۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی اسپوٹنک نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق منگل کی رات  کی لبنانی حزب اللہ کے سکریٹری جنرل سید حسن نصراللہ کی تقریر کے جواب میں  شمالی فلسطین کےمقبوضہ علاقوں کے کمانڈرجنرل امیر برعام نے کہا کہ شمالی محاذ پر جنگ بہت مشکل اور پیچیدہ ہوگی، اسرائیلی فوج نے غزہ کو جو ضربہ لگایا ہے وہ اس طاقت کا صرف ایک مقدمہ تھا جو اگلی جنگ میں شمالی محاذ پر استعمال ہوگی۔

قابل ذکر ہے کہ 14 جولائی 2006 کو لبنان کے خلاف صیہونی حکومت کی جنگ،جسے جولائی کی جنگ یا لبنان کی دوسری جنگ کے نام سے جانا جاتا ہے، کی 14 ویں برسی کے موقع پر جنرل برعام نے دعوی کیاکہ اس وقت جب اسرائیل لبنان کے خلاف جنگ کی 15 ویں سالگرہ منا رہا ہے، نصراللہ کی پناہ میں موجودگی، ہماری کامیابی ہے جو سالوں کے لئے حاصل ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ حزب اللہ کے سکریٹری جنرل نے منگل کے روز ایک تقریر میں کہا کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاھو اس وقت شدید بحران کا شکار ہیں اور اس بات کا امکان ہے کہ وہ اس بحران کا کوئی بے وقوفانہ حل نہ نکالیں، اس معاملے کی نگرانی کی جانی چاہئے۔

انہوں نے آخر میں کہا کہ  ہمیں کینہ توز، احمق اور بحران سے دوچار دشمن کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جو ممکن ہے اندرونی تناؤ سے بھاگنے کی کوشش کرے۔

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
5 + 6 =