۱۲ آذر ۱۴۰۱ |۹ جمادی‌الاول ۱۴۴۴ | Dec 3, 2022
حجت الاسلام والمسلمین ناصر عباس جعفری دبیر کل مجلس وحدت مسلمین پاکستان

حوزہ/ شدت پسند گروہ جو طاقت کے بل بوتے پر ریاست کی رٹ کو دیدہ دلیری کے ساتھ للکار رہے ہیں ان کے ساتھ مصلحت پسندانہ رویہ ملک کو تباہی و بربادی کی طرف لے جائے گا۔اگر ایسے واقعات کو طاقت کے ساتھ  روکا نہ گیا تو ہم دنیا کا سامنا کرنے کے قابل نہیں رہیں گے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،اسلام آباد/ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ ملک کو شدید اقتصادی مشکلات اور عدم استحکام کا شکار ہونے سے بچانے کے لیے متشدد اور جنونی مذہبی رجحان کا خاتمہ ناگزیر ہے۔مذہبی جنونیت اور متشدد مذہبی گروہوں نے دین اسلام اور وطن عزیز کے تشخص کو شدید نقصان پہنچایا ہے۔سانحہ سیالکوٹ ملک کی تاریخ کے سیاہ ابواب میں ایک ایسا بدترین اضافہ ثابت ہوگا جس کے نتائج شدید عالمی ردعمل کی صورت میں سامنے آ کے رہیں گے ۔ایک ایسے ملک کے باشندے کو وحشیانہ انداز میں قتل کیا گیا جو ہر سال آنکھوں کے غیر معمولی عطیات پاکستان کو مہیا کرتا ہے ۔اس سانحہ پر ہر باشعور پاکستانی شرمسار ہے۔ملک میں عدم تحفظ کے بڑھتا ہوئے احساس نے ہر ایک کو تشویش میں مبتلا کر رکھا ہے۔

انہوں نے سانحہ سیالکوٹ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ توہین کے نام پر کسی کو بلا تحقیق سزا دینے کا اختیار ریاست کے پاس بھی نہیں۔ ایسے واقعات کے سدباب کے لیے سخت ترین اقدامات کرتے ہوئے بیرونی سازشوں پر بھی نظر رکھنا ہو گی۔ملک دشمن عناصر ارض پاک کو بحرانوں کا شکار کرنے کے لیے نت نئے ہتھکنڈوں میں مصروف ہیں۔کسی غیر ملکی کے ساتھ اس طرح کا وحشیانہ سلوک بیرونی سرمایہ کاروں کو پاکستان میں جانے سے روکنے کا جواز فراہم کرسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ شدت پسند گروہ جو طاقت کے بل بوتے پر ریاست کی رٹ کو دیدہ دلیری کے ساتھ للکار رہے ہیں ان کے ساتھ مصلحت پسندانہ رویہ ملک کو تباہی و بربادی کی طرف لے جائے گا۔اگر ایسے واقعات کو طاقت کے ساتھ روکا نہ گیا تو ہم دنیا کا سامنا کرنے کے قابل نہیں رہیں گے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
2 + 0 =