۶ تیر ۱۴۰۱ |۲۷ ذیقعدهٔ ۱۴۴۳ | Jun 27, 2022
آبِ زمزم

حوزہ/ جاری نوٹیفکیشن میں ایئرلائن کمپنیوں سے کہا گیا ہے کہ وہ آبِ زمزم پر پابندی کے فیصلے پر سختی سے عمل کریں، ایسا نہیں ہونے پر ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،آبِ زمزم کی اہمیت سے تو ہم سبھی واقف ہیں اور ایسے افراد جو حج پر نہیں جا پاتے، وہ عازمین حج سے درخواست کرتے ہیں کہ آبِ زمزم یعنی زمزم کا پانی اپنے ساتھ ضرور لائیں۔ لیکن اب ایسی درخواستیں آپ نہیں کر پائیں گے کیونکہ سعودی حکومت نے آبِ زمزم لے جانے پر پابندی عائد کر دی ہے۔ بدھ کے روز سعودی حکومت کی طرف سے ایک نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ عازمین حج کے سامان میں آبِ زمزم شامل نہیں ہوگا۔ حالانکہ یہ نہیں بتایا گیا کہ یہ فیصلہ کیوں لیا گیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق جو نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے اس میں ایئرلائن کمپنیوں سے کہا گیا ہے کہ وہ آبِ زمزم پر پابندی کے فیصلے پر سختی سے عمل کریں۔ ایسا نہیں ہونے پر ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ قابل ذکر ہے کہ پہلے ہر عازمین حج کو 10 لیٹر آبِ زمزم لانے کی اجازت تھی۔ بعد میں سعودی حکومت نے اسے گھٹا کر 5 لیٹر کر دیا، لیکن اب اس پر مکمل پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

سعودی جنرل ایویشن اتھارٹی (ایس جی اے اے) نے اس سلسلے میں جو آفیشیل نوٹیفکیشن جاری کیا ہے اس میں کہا گیا ہے کہ عقیدتمند اور مسافر ایئرپورٹ سے روانہ ہوتے وقت چیک اِن سامان میں یہ پاکیزہ پانی نہیں لے جا سکیں گے۔ اس حکم پر ایگزیکٹیو وائس پریسیڈنٹ فار اکونومک پالیسیز اینڈ انٹرنیشنل کو آپریشن کے دستخط ہیں۔ اس حکم پر سبھی کمرشیل اور پرائیویٹ ایئرلائنس کمپنیوں کو عمل کرنا ہوگا۔ حکم کے مطابق سامان میں کسی بھی طرح کا لیکوئڈ (آبِ زمزم سمیت) نہیں لے جایا جا سکے گا۔

نوٹیفکیشن کے مطابق جدہ اور سعودی عرب کے تمام ائیرپورٹس پر موجود اسٹاف اس بات کی سختی سے جانچ کریں گے کہ کسی مسافر کے سامان میں آبِ زمزم کی بوتل تو نہیں ہے۔ ایئرلائنس کو اس بارے میں اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پراسیجرس یعنی ایس او پیز جاری کر دیے گئے ہیں۔

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
4 + 4 =