۱ اردیبهشت ۱۴۰۳ |۱۱ شوال ۱۴۴۵ | Apr 20, 2024
بالصور/ عشاق المهدي (عج) في مسيرتهم من حرم السيدة المعصومة عليها السلام إلى مسجد جمكران في النصف من شعبان بقم المقدسة

حوزہ|بقلم: علامہ طالب جوہری رح/ہم کہ ہیں منتظر لو لگائے ہوئے،آ زمانے پہ نظریں جمائے ہوئے،دوش پر رایت حق سجائے ہوئے،توسن وقت کی باگ اٹھائے ہوئے،راہ پیما ہو تو از فدک تا جمل/العجل العجل العجل العجل

حوزہ نیوز ایجنسی|

بقلم: علامہ طالب جوہری رح

اے امیرِ ابد اے سفیرِ ازل

شجرہِ طیبہ کی ریاضت کے پھل

اے علیؐ و محمدؐ کے دل کے کنول

ہر اولوالعزم ہادی کے نعم البدل

اے ضمیر مشیت کے ارماں نکل

العجل العجل العجل العجل

تیری شاہی امر تیرا فرماں اٹل

تیری مٹھی میں تجدید نظم علل

تو تمنائے موعود خیر الملل

کعبہ آدمیت کے زمزم ابل

چل دیار خلیلؑ و محمدؐ کو چل

العجل العجل العجل العجل

یہ امیدوں کے بکھرے ہوئے خار و خس

روح کا قافلہ تشنگی کا جرس

کتنی پیاسی ہے یہ سر زمین نفس

اے سحاب مشیت کے پانی برس

کتنے دہقاں اٹھائے ہیں کاندھوں پہ ہل

العجل العجل العجل العجل

یوں تو موسم کے تیور بگڑتے رہے

باد بانوں سے طوفاں جھگڑتے رہے

پھر بھی مانجھی سمندر سے لڑتے رہے

ہم تیرا نام لے کر اکڑتے رہے

پھر نمایاں ہے موسم کی تیوری پہ بل

العجل العجل العجل العجل

میرے ماں باپ قرباں تیرے نام پر

آج دین محمدؐ ہے نیلام پر

مفتیوں کا اجارہ ہے اسلام پر

حق کو تیری ضرورت ہے ہر گام پر

اے عمل اے خدا وند رد عمل

العجل العجل العجل العجل

لشکروں کی کڑک کی کمانیں بھی ہیں

انتخابات قومی کی تانیں بھی ہیں

دیں فروشی کی خاطر دکانیں بھی ہیں

مسجدوں میں مسلسل اذانیں بھی ہیں

گم ہے دنیا میں آواز خیر العمل

العجل العجل العجل العجل

ہم کہ ہیں منتظر لو لگائے ہوئے

آ زمانے پہ نظریں جمائے ہوئے

دوش پر رایت حق سجائے ہوئے

توسن وقت کی باگ اٹھائے ہوئے

راہ پیما ہو تو از فدک تا جمل

العجل العجل العجل العجل

تبصرہ ارسال

You are replying to: .