۳۱ اردیبهشت ۱۴۰۱ |۱۹ شوال ۱۴۴۳ | May 21, 2022
تصاویر/ دیدار علمای پاکستان با آیت الله مکارم شیرازی
سعودی عرب کے اسکولوں میں خطرناک اور غیر انسانی تعلیم دی جاتی ہے

حوزہ / سعودی عرب کے ہائرسکینڈری نصاب کی کتب میں لکھا ہے کہ جو لوگ قبور کا احترام کرتے ہیں ان کی جانیں اور اموال حلال ہیں۔لیکن اب لوگ جانتے ہیں کہ داعش اور تکفیری گروہ بشریت کے دشمن ہیں اور یہی آگاہی لوگوں کی بیداری اور ان تکفیری افراد سے دوری کا باعث بنی ہے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق آیت اللہ مکارم شیرازی نے آج صبح مدرسہ علمیہ امام سجاد(علیہ السلام) قم میں جماعت اسلامی پاکستان کے جنرل سیکرٹری اور ان کے ہمراہ پاکستان سے آئے ہوئے وفد سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہا: آج اسرائیل کے زیر نظر دنیا کا میڈیا ایران کے خلاف منفی پروپیگنڈے میں مصروف ہے ۔وہ دنیا والوں کو ایران کے متعلق مثبت سوچنے نہیں دیتا لیکن آپ کی گفتگو سے ظاہر ہوتا ہے کہ آپ ایران کے خلاف دشمن کے پروپیگنڈے کا شکار نہیں ہیں۔

 آیت اللہ مکارم شیرازی نے کہا: دنیائے اسلام کے پاس وحدت کے سوا  سب کچھ ہے اس لئے تو امریکہ مسلمانوں پر مسلط ہے۔

 انہوں نے کہا: آپ اتحاد و وحدت کے لئے ہمارے ملک میں تشریف لائے ہیں اور یہ بہت بڑی توفیق ہے جو خدا نے آپ کو عنایت کی ہے۔

اس شیعہ مرجع تقلید نے کہا: آپ نے جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت کا ذکر کیا ہے۔ وہ وحدت کے منادی تھے۔ انہوں نے مسلمانوں کو داعش کے شر سے نجات دی اور امریکہ نے بھی اسی لیے انہیں شہید کیا۔

آیت اللہ مکارم شیرازی نے دو ملتوں ایران اور پاکستان کی دوستی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا: ملت ایران پاکستانی لوگوں کو بہت چاہتی ہے کیونکہ پاکستان کے لوگ مخلص ہیں اور اسلام کی عظمت و سربلندی کے خواہاں ہیں۔

 اس مرجع تقلید نے مزید کہا: دو ملتوں کے درمیان باہمی رابطہ زیادہ ہونا چاہیے تاکہ ان کے درمیان اتحاد و وحدت کے رشتے میں مزید استحکام آئے۔

انہوں نے عالمی استکبار کے مقابلے میں وحدت و مزاحمت کو کامیابی کا راز قرار دیتے ہوئے کہا: ملت عراق نے امریکہ کے زیرتسلط ہونے کے باوجود عراق سے امریکی افواج کے انخلاء کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ اگر کوئی ملت کسی چیز کا ارادہ کر لے تو وہ اس میں ضرور کامیاب ہوتی ہے۔

آیت اللہ مکارم شیرازی نے کہا: ضرورت اس امر کی ہے کہ نوجوانوں اور یونیورسٹیوں کے طلباء کو اتحاد و وحدت کا درس دیا جائے۔ تکفیری اپنے بچوں کو تکفیر کا درس دیتے ہیں۔ سعودی عرب کے ہائرسکینڈری اسکولز کے نصاب کی کتب میں لکھا ہے کہ جو افراد قبروں کا احترام کرتے ہیں ان کی جانیں اور اموال حلال ہیں۔

انہوں نے کہا:  اب لوگوں کو معلوم ہے کہ تکفیری بشریت کے دشمن ہیں اور یہی آگاہی لوگوں کی بیداری اور ان افراد سے ان کی دوری کا باعث ہے۔

آیت اللہ مکارم شیرازی نے کہا: فرصت سے استفادہ کرتے ہوئے وحدت کی بنیادوں کو مضبوط بنانا چاہیے تاکہ ہم بہتر انداز سے اسلام دشمن عناصر  کا مقابلہ کرسکیں۔

دینی علوم کے اس نامور استاد نے کہا: امریکہ نے ایران پر انتہائی سخت اقتصادی پابندیاں عائد کر کے سوچا تھا کہ شاید ایران ٹوٹ جائے گا لیکن ایسا نہیں ہوا۔ اور یہ سب مزاحمت کا نتیجہ ہے۔ دیگر اسلامی ممالک کو بھی امریکہ کے مقابلے میں مزاحمت کرنی چاہیے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
1 + 1 =