۲۰ مرداد ۱۴۰۱ |۱۳ محرم ۱۴۴۴ | Aug 11, 2022
علامہ ساجد نقوی

حوزہ/ علامہ ساجد نقوی نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ جنگ کا آپشن چھوڑ کر جامع لائحہ عمل مرتب کیا جائے جس کے نتیجہ میں سنجیدہ اقدامات اٹھائے جائیں تاکہ مسئلہ کشمیر کسی نتیجہ تک پہنچے ۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کہتے ہیں کہ جنوبی ایشیاکا پائیدار امن مسئلہ کشمیر سے جڑا ہے، مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے جامع لائحہ عمل اور عملی اقدامات ضروری ہیں۔ جنگ کا آپشن چھوڑ کر ایک جامع لائحہ عمل مرتب کیا جائے جس کے نتیجہ میں سنجیدہ اقدامات اٹھائے جائیں تاکہ مسئلہ کشمیر کسی نتیجہ تک پہنچے ۔

انہوں نے کہا کہ” مسئلہ کشمیر “ اقوام متحدہ اور دیگر بین الاقوامی فورمز پر اُٹھایا جا چکا ، ڈوزئیر بھی دئیے جاچکے اور ہندوستان کے جنگی جنون سے متعلقہ ای یوڈس انفولیب رپورٹ سے بھی بین الاقوامی ادارے آگاہ اور اس کی مذمت کر چکے لیکن حکومت ہندوستان کی ہٹ دھرمی اور مظالم میں مسلسل اضافہ ہوتا جارہا ہے ، کشمیریوں کی آزادی سلب ہوتی جارہی ہے اور ان پر عرصہ حیات تنگ ہوتا جا رہاہے ۔

مزید کہا کہ اب ضرورت اس امر کی ہے کہ خارجہ امور کے ماہرین، ماہرین قانون ، سیاسی شخصیات، دانشوروں، سکالرز، معروف صحافیوں ، علماء ،سول سوسائیٹی کے نمائندوں اور سٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے جامع قومی لائحہ عمل تیارکیا جائے، متفقہ لائحہ عمل پر ایک آواز ہو کر بھر پور عملی اقدامات کئے جائیں تاکہ مسئلہ کشمیر کسی نتیجہ تک پہنچ سکے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
6 + 11 =