۸ تیر ۱۴۰۱ |۲۹ ذیقعدهٔ ۱۴۴۳ | Jun 29, 2022
آیت اللہ حافظ ریاض نجفی

حوزہ/ صدر وفاق المدارس الشیعہ پاکستان نے ڈیرہ اسمٰعیل خان ، ملتان میں نوجوانوں کی شہادت پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں فرقہ ورانہ دہشت گردی پھر شروع کردی گئی، ریاستی ادارے اور حکومت کہاں ہے؟

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،لاہور/ وفاق المدارس الشیعہ پاکستان کے صدر آیت اللہ حافظ سید ریاض حسین نجفی، سیکرٹری جنرل علامہ محمد افضل حیدری اور نائب صدر علامہ مرید حسین نقوی نے ڈیرہ اسمٰعیل خان اور ملتان میں اہل تشیع نوجوانوں کی شہادت پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک بار پھر فرقہ ورانہ دہشت گردی شروع کردی گئی ہے۔ریاستی ادارے اور حکومت کہاں ہے؟

علی مسجد جامعة المنتظر میں درس قرآن کے دوران انہوں نے کہا کہ ڈیرہ اسماعیل خان میں تین افراد اور ملتان میں ایک نوجوان کی ٹارگٹ کلنگ پر ملت جعفریہ میں تشویش پائی جاتی ہے۔ قاتل خارجی دہشتگرد گروہ ایک بار پھر متحرک ہو گیا ہے ۔فرقہ وارانہ دہشت گردی کے ذریعے 1990ءکی دہائی کے حالات دوبارہ پیدا کیے جا رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نیشنل ایکشن پلان کے باوجود ٹارگٹ کلنگ کا جاری رہنا خود ریاستی اداروں اور ایجنسیوں کے وجود پر سوالیہ نشان ہے؟ انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان میں فرقے موجود ہیں،فرقہ واریت کا کوئی وجود نہیں ہے۔ ٹارگٹ کلنگ دہشت گردی کا مسئلہ ہے ۔

آخر میں کہا کہ بیرونی قوتوں کے ایماء پر پاکستان میں ٹارگٹ کلنگ کے ذریعے ملکی حالات خراب کرنے کی سازش کی جارہی ہے۔اہل تشیع نے ہمیشہ صبر و تحمل کا مظاہرہ کیا ہے ۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ شہداءکے قاتلوں کو بے نقاب کرکے انہیں کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔انہوں نے لواحقین سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے شہداءکی بلندی درجات کی دعا بھی کی۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
2 + 1 =