۱ خرداد ۱۴۰۱ |۲۰ شوال ۱۴۴۳ | May 22, 2022
علامہ سبطین سبزواری

حوزہ/ عزاداری کے خلاف جو ایف آئی آرز درج کی گئی ہیں مضحکہ خیز اور قابل مذمت ہیں، عزاداری کو محدود کرنے کے زعم سے باہر نکلے، ہمیں احتجاج پر مجبور نہ کیا جائے۔ہم نے احتجاج کا راستہ اختیار کیا تو حکومت کے لیے مشکلات پیدا ہوں گی۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، شیعہ علما ءکونسل شمالی پنجاب کے صدر علامہ سید سبطین حیدر سبزواری نے سندھ میں تحفظ عزاداری لانگ مارچ کی کامیابی پر صوبائی صدرعلامہ سید ناظر عباس تقوی کو مبارک باد دی ہے، جنہوں نے سکھر سے کراچی تک عوامی ریلی کی قیادت کی اور حکومت مجالس عزا، اربعین واک مشی اور جلوسوں میں شرکت پر عزادارا ن امام حسین علیہ السلام کے خلاف درج تمام مقدمات واپس لینے پر مجبور ہوئی ۔

انہوں نے کہا کہ قائد ملت جعفریہ علامہ سید ساجد علی نقوی کی مدبرانہ قیادت نے تشیع کو ایک اور کامیابی سے ہمکنار کیا ہے اور الحمد للہ اسلام دشمن شیطانی یزیدی قوتوں کو شکست ہوئی ہے ۔ہم اپنی حکومت پنجاب کو بھی متنبہ کرتے اور مطالبہ کرتے ہیں کہ عزاداران امام حسین کے نام فورتھ شیڈول سے نکالنے اور مقدمات ختم کرنے کا اعلان کرے، ورنہ سندھ سے زیادہ سخت احتجاج پنجاب کی سڑکوں پر ہوگا۔عزاداری کے خلاف جو ایف آئی آرز درج کی گئی ہیں مضحکہ خیز اور قابل مذمت ہیں۔ حکمران ہوش کے ناخن لیں، عزاداری کو محدود کرنے کے زعم سے باہر نکلے، ہمیں احتجاج پر مجبور نہ کیا جائے۔ہم نے احتجاج کا راستہ اختیار کیا تو حکومت کے لیے مشکلات پیدا ہوں گی۔ ہم شیطانی عزائم سے آگاہ ہیں اورواضح کرتے ہیں کہ عزاداری ہماری شناخت اور قوت ہے، اسے خون دے کر بھی جاری رکھیں گے ۔کوئی پابندی برداشت نہیں کریں گے۔

ہمارا مطالبہ ہے کہ فورتھ شیڈول کو شریف شہریوں کی بجائے، تکفیری دہشت گردوں اور ریاست دشمن عناصر کے خلاف استعمال کیا جائے۔فورتھ شیڈول کا ظالمانہ قانون، آئین کی خلاف ورزی اور تشیع کو دیوار سے لگانے کی سازش کی ہے، ظالمانہ اقدام کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے گا ۔حکومت انتہائی اقدام پر مجبور نہ کرے ۔ شہادت اور صعوبتیں برداشت کرنا نسلوں سے تشیع کی تاریخ کا حصہ ہے، کسی سے مرعوب پہلے ہوئے ، اور نہ ہی اب ہوں گے

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
2 + 0 =