تیتر سه زیرسرویس

  • "سلام فرماندہ"؛ ظہور کی جانب ایک قدم 

    "سلام فرماندہ"؛ ظہور کی جانب ایک قدم 

    حوزہ/ سلام فرماندہ،سلام فرماندہ کی دلنشین صداوں نے دلوں کو حجت خدا کی جانب کچھ اسطرح راغب کردیا ہے کہ عقلیں سمجھنے سے اور زبانیں بیان کرنے سے قاصر ہیں۔ بہت سے لوگ شاید یہ سمجھ رہے ہوں کہ ایک عام سادہ ترانہ ہے اور بس۔

  • رہبر انقلاب کی نظر میں تحقیق کی اہمیت

    رہبر انقلاب کی نظر میں تحقیق کی اہمیت

    حوزہ/ قوموں کی غلامی سے نجات اور دنیا کے اقوام پرحکمرانی علم و تحقیق سے ہی ممکن ہے۔لیکن ہر قسم کی تحقیق استقلال و آزادی کا باعث نہیں بنتی بلکہ وہ علم اور تحقیق جو  ایمان،اخلاق اور دین کے سائے میں ہوتاکہ اس علم کا نتیجہ ایک اسلامی تمدن کیلئے زمینہ ساز بنے نہ کہ فرعونی تمدن کیلئے۔

  • رہبر انقلاب کے افکار کی جامعیت اور ترویج کی ضرورت

    رہبر انقلاب کے افکار کی جامعیت اور ترویج کی ضرورت

    حوزہ/ رہبر انقلاب کی نظر میں انسان کو دور اندیش ہونا چاہیں کیونکہ دور اندیش قوم ہی اپنے آپ کے ساتھ آئندہ آنے والی  نسلوں کو دشمنوں کی چیرہ دستیوں سے بچا کر عزت و شرف کے بام عروج کی طرف لے جاسکتی ہیں۔

  • رہبر معظم کی نظر میں سوشل میڈیا کا کردار

    رہبر معظم کی نظر میں سوشل میڈیا کا کردار

    حوزہ/ رہبر معظم انقلاب کے نزدیک میڈیا کی بہت زیادہ اھمیت ہے۔ اور آپ میڈیا کو دین مبین اسلام کی تبلیغ و ترویج کا بہترین ذریعہ سمجھتے  ہیں۔کیونکہ میڈیا کے ہی ذریعے سے ہم دنیا کے گوشہ و کنار تک دین اسلام کی خوبصورت پیغامات کی اشاعت کرسکتے ہیں۔اور دنیا کے سامنے اسلامی بہترین ثقافت و تہذیب،دین کی حقیقی روح کو پیش کرنے کاعملاور اس کے ذریعے لوگوں کی ھدایت کر سکتے ہیں۔

  • رہبرِ انقلاب آیت اللہ خامنہ ای عالم اسلام کے ایک مفکر اور مصلح

    رہبرِ انقلاب آیت اللہ خامنہ ای عالم اسلام کے ایک مفکر اور مصلح

    حوزہ/دنیا کے مفکرین، ماہرین اور صاحب فکر ونظر اور دانشوروں کے افکار ونظریات کسی خاص قوم یا ملک تک محدود نہیں بلکہ اگر انسانی مسائل کا حل اس نظریے میں موجود ہے تو یہ انسانیت کا سرمایہ ہے۔

  • مردہ باد امریکہ ۔۔۔ حلق سے نیچے اتارو

    مردہ باد امریکہ ۔۔۔ حلق سے نیچے اتارو

    حوزہ/ اس مکالمے نے مجھے بھی مبہوت کر دیا ۔ فیلم ختم ہوتے ہی میں نے موبائل آن کیا۔ وٹس ایپ میں ایک کالم پر میری نظر پڑی ۔ جسکا موضوع " سوچ کا سفر " تھا ۔ مقدرعباس نے یہ کالم لکھا تھا ۔ ان کا کہنا تھا کہ " امت مسلمہ کے تمام مسائل کی جڑ ، یہی چیمپئن ( امریکہ ) ہے ۔ اسرائیل کے ناجائز وجود سے لیکر داعش کی خونریزیوں تک اور آج کی حالیہ صورت حال میں یہ ہر دیکھنے والی آنکھ جان چکی ہے کہ اصل فساد کی جڑ کون ہے ؟

  • سوشل میڈیا اور ہماری اہم ذمہ داریاں

    سوشل میڈیا اور ہماری اہم ذمہ داریاں

    حوزہ/آج کی دنیا میں ٹیکنالوجی کی ترقی اور تیز رفتار کمیونیکیشن کی وجہ سے لوگوں کا ایک دوسرے کے ساتھ رابطے کا سلسلہ انتہائی آسان ہوچکا ہے، یہی وجہ ہے کہ نسل جدید کی زندگی کا آدھا حصہ سوشل میڈیا پر گزر جاتا ہے-

  • شہید مطہری کا سوز جگر

    شہید مطہری کا سوز جگر

    حوزہ؍وہ دوسروں سے اتحاد کو ضروری سمجھتے تھے مگر اتنا نہیں کہ اس کی قیمت دین سے جدائی کی شکل میں چکانا پڑے۔ دوسروں سے دوستی اچھی چیز ہے مگر اتنی نہیں کہ نتیجہ میں دین کا مستوی القامہ پیکر مُثلہ ہوجائے۔ 

  • شہید مطہری کی چار نمایاں خصوصیات

    شہید مطہری کی چار نمایاں خصوصیات

    حوزہ/ شہید مطہری ایک دور اندیش اور مستقبل پر نظر رکھنے والے مفکر تھے ۔ کوئی بھی کام بغیر سوچے سمجھے انجام نہیں دیتے تھے ، ہمیشہ غور و فکر کیا کرتے تھے۔ اس بات پر نظر رکھتے تھے کہ کس کام میں کس وقت کس سے اور کس طرح کام لیا جائے ، کس گروہ سے کام لینا چاہیے اور کس گروہ سے کام نہیں لینا چاہیے۔ اسی وجہ سے آپ کی ایک صفت یہ تھی کہ آپ مستقبل کے حادثات کے بارے میں مطمئن رہتے تھے۔

  • تحریف کے علل و اسباب اور نقصانات شہید مطہری کی نگاہ میں

    تحریف کے علل و اسباب اور نقصانات شہید مطہری کی نگاہ میں

    حوزہ/ شہید مطہری انحرافی نظریات اور اسلام کی غلط تفسیر  کو استعماری طاقتوں امریکہ اور سویت یونین سے زیادہ خطرناک سمجھتے تھےآج اسلام کو جس چیز سے  خطرہ ہے وہ صرف امریکہ اور دوسری استعماری طاقتیں ہی نہیں بلکہ اسلامی احکام کی غلط تفسیر اور ان میں تحریف کرنا   زیادہ خطرناک ہے۔