۲ مرداد ۱۴۰۳ |۱۶ محرم ۱۴۴۶ | Jul 23, 2024
عید نوروز

حوزہ/ نوروز کا دن وہ دن ہے جب خداوند عالم نے اپنے بندوں کے ساتھ عہد کیا تھا کہ وہ اس کی عبادت کریں گے اور اس کے ساتھ شراکت نہیں کریں گے اور انبیاء اور ائمہ (ع) پر ایمان لائیں گے۔

حوزہ نیوز ایجنسیمرحوم مجلس رحمتہ اللہ کی معزز کتاب  بہارالانوار میں نوروز کے بارے میں متعدد روایات نقل کی گئی ہیں ، لہذا جلد 59 میں ، 45 سے زیادہ صفحات اس موضوع کے لئے وقف کیے گئے ہیں۔ اس مختصر میں ان میں سے کچھ عنوانات پر توجہ دی گئی ہے۔

معلی ابن خانس نے روایت کیا ہے کہ نوروز کے دن، میں امام جعفر صادق علیہ السلام کی خدمت میں حاضر ہوا، امام (ع) نے مجھ سے مخاطب ہو کر فرمایا: کیا تم اس دن کو جانتے ہو؟ میں نے کہا: میں آپ پر قربان جاؤں، یہ وہ دن ہے جسے ایرانی بہت اچھا سمجھتے ہیں اور ایک دوسرے کو تحائف دیتے ہیں۔ تو امام نے کہا: میں تمہیں اس کی وجہ بیان کروں کرنا ہوں؛ جو کہ بہت پرانی ہے۔ میں نے کہا کہ اگر میں یہ بات آپ سے سیکھتا ہوں تو یہ اس سے بہتر ہوگا کہ میرے مردے زندہ ہوجائیں اور میرے دشمنوں کا قلع قمع ہوجائے۔

تو انہوں نے فرمایا: اے معلی! نوروز کا دن وہ دن ہے جب خداوند عالم نے اپنے بندوں کے ساتھ عہد کیا تھا کہ وہ اس کی عبادت کریں گے اور اس کے ساتھ شراکت نہیں کریں گے اور انبیاء اور ائمہ (ع) پر ایمان لائیں گے۔ نوروز پہلا دن ہے جب سورج طلوع ہوا تھا اور اچانک ہوا چل رہی تھی اور اس دن زمین کا تارا پیدا ہوا تھا ... نوروز کا دن وہ دن ہے جب علی (ع) نے نہروان میں خارجیوں کو قتل کیا تھا۔ اس دن زمین کے پھول پیدا ہوئے تھے۔ اسی دن نوح علیہ السلام کا کشتی پہاڑ جودی پر اترا تھا۔ یہ وہی دن ہے جب جبریل علیہ السلام نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم پر نازل ہوئے تھے۔ اسی دن جب حضرت ابراہیم علیہ السلام نے بتوں کو توڑا تھا۔ اسی دن ، حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے علی (ع) کو اپنے کندھوں پر اٹھا کر قریش کے بتوں کو اکھاڑ پھینکا ... ایسے ہی دن  حضرت مہدی (ع) حاضر ہوں گے اور ہمیں ایسے ہی دن انکے ظہور کی توقع ہے، کیونکہ نوروز ہمارا اور ہمارے شیعوں کا ہے۔ نوروز سفر اور کھیتی باڑی اور ضروریات کی تلاش میں بہت اچھا ہے، اس دن شادی کرنا بہت مناسب ہے۔(١) 
اس کتاب میں یہ بھی مذکور ہے کہ شیخ طوسی اور دوسرے بعد کے لوگوں نے نوروز کے لئے خصوصی اعمال بیان کیے ہیں، ان میں: غسل، روزہ ، نماز وغیرہ شامل ہیں (٢)
 یہ بھی روایت ہے کہ احمد ابن فہد حلی رحمة اللہ علیہ  کتاب مہذب البارع میں فرماتے ہیں کہ: نوروز ایک عزیز اور اعلی درجہ کا دن ہے۔ (٣)  مرحوم سید مرتضیٰ، علامہ بہاءالدین علی ابن حمید نے معلی ابن خنیس کا حوالہ دیتے ہوئے امام صادق علیہ السلام سے روایت کیا کہ: نوروز وہ دن ہے جس دن نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے امیر المومنین علی علیہ السلام کے لئے غدیر میں ایک معاہدہ کیا اور اپنے بعد انہیں امام مقرر کیا۔۔۔ ،اور کوئی نوروز نہیں گزرتا ہے مگر یہ کہ ہم اس دن قائم آل محمد علیہ السلام کے ظہور کے منتظر ہوتے ہیں اور نوروز ہمارے دنوں میں سے ایک ہے۔ (4)

مرحوم حاج شیخ عباس قمی رحمه الله در فصل یازدهم کتاب گرانسنگ مفاتیج الجنان اعمال ویژه ای برای عید نوروز آورده اند از جمله: نماز، ادعیه متعدد و صدقه دادن. و نیز از امام ششم علیه السلام روایت کرده که چون عید نوروز فرا رسد، غسل کن و پاکیزه ترین جامه های خود را بپوش و به بهترین بوهای خوش خود را خوشبو گردان. صله ارحام، عیادات از بیماران، بزرگان دین، علما و پدر و مادر از جمله برنامه های این روز است.

حاجی شیخ عباس قمی رحمة اللہ علیہ ، قیمتی کتاب مفاتیح الجنان کے گیارہویں باب میں ، نوروز کے لئے مخصوص اعمال لے کر آئے ہیں ، جن میں: دعا ، متعدد دعائیں اور صدقہ کرنا ہے۔ انہوں نے چھٹے امام علیہ السلام سے یہ بھی روایت کیا کہ جب نوروز آئے تو غسل کریں اور اپنا صاف ستھرا لباس پہنیں اور بہترین خوشبو سے اپنے آپ کو خوشبو عطا کریں۔ اس دن کے پروگراموں میں ہمدردی ، مریضوں ، مذہبی رہنماؤں ، اسکالرز اور والدین سے ملاقات شامل ہیں۔

ہم حوزہ نیوز ایجنسی کی جانب سے عید نوروز کی مناسبت سے اپنے تمام قارئین کی خدمت میں مبارک باد پیش کرتے ہیں۔

حوالے: 
۱- علامه مجلسی، بحارالانوار، ج ۵۹، ص ۹۱، باب ۲۲
۴و۳و۲- وہی، ص ۱۱۶;۱۱۷.

تبصرہ ارسال

You are replying to: .