۳۰ مهر ۱۴۰۰ |۱۵ ربیع‌الاول ۱۴۴۳ | Oct 22, 2021
علامہ حسن ظفر نقوی

حوزہ/ لاپتہ افراد کی بازیابی کے لئے چلائی جانے والی ہر تحریک کی حمایت کی جائے گی اور کسی بھی صورت میں لاپتہ افراد کے ورثا کو تنہا نہیں چھوڑا جائے گا۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، العارف اکیڈمی میں نشست سے خطاب کرتے ہوئے معروف عالم دین نے کہا کہ پاکستان میں قانون کا اس طرح مذاق اڑایا جاتا ہے جس کی مثال دنیا میں کہیں نہیں ملتی اس کا نتیجہ اچھا نہیں نکل رہا، عام آدمی کا اعتبار اداروں سے اٹھتا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ لاپتہ افراد کی بازیابی کے لئے چلائی جانے والی ہر تحریک کی حمایت کی جائے گی اور کسی بھی صورت میں لاپتہ افراد کے ورثا کو تنہا نہیں چھوڑا جائے گا۔

مزید زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ کیسے ہوسکتا ہے کہ لوگوں کو لاپتہ کردیا جائے اور ان کے وارث آواز بھی بلند نہ کریں، لاپتہ افراد لاوارث نہیں ہیں کہ ان کیلئے آواز نہیں اٹھائی جائے گی۔ 

آخر میں کہا کہ رات کی تاریکی میں چادر اور چار دیواری کی حرمت پامال کی جاتی ہے اور والدین کے سامنے ان کے بچوں کو مارتے پیٹتے اٹھایا جاتا ہے اور پھر لاپتہ افراد کی فہرست میں ڈال دیا جاتا ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
5 + 0 =