۶ آبان ۱۴۰۰ |۲۱ ربیع‌الاول ۱۴۴۳ | Oct 28, 2021
السيد الشهيد محمدباقر الصدر

حوزہ/ آیت اللہ سید محمد باقر الصدر حضرت امام خمینی رحمت اللہ علیہ کے انقلابی افکار ان کے خلوص اور للہیت سے بہت زیادہ متاثر تھے اور آپ انقلاب اسلامی اور حضرت امام خمینی رحمۃ اللہ علیہ کے پر زور حامیوں میں سے تھے آپ نے صدامی آمریت کے خلاف قیام کیا اور آپ کی بہن شہیدہ سیدہ آمنہ بنت الہدیٰ جو خود اجتہاد کے درجہ پر فائز عالمہ اور فاضلہ شخصیت تھیں انہوں نے بھی آپ کے مشن اور تحریک کو آگے بڑھاتے ہوئے صدام کے جرائم اور اسلام دشمن اقدامات کی مخالفت کی اور راہ خدا میں شہادت پاٸی۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے عالم اسلام کے عظیم فلاسفر مفکر اور انقلابی رہنما آیت اللہ شہید سید باقر الصدر کی 41 ویں برسی کی مناسبت سے کہا ہے کہ شہید مظلوم سید باقر الصدر کے انقلابی افکار آج بھی ملت عراق اور امت مسلمہ کے لیے عظیم سرمایہ ہیں آپ نے عراق کے اندر صدامی آمریت اور اس کے اسلام دشمن فیصلوں کے خلاف قیام کیا اور صبر استقامت اور جہاد کی نٸی تاریخ رقم کی جو آپ کی شہادت پر منتج ہوا۔

آپ عصر حاضر کے عظیم مفکر ہیں کہ جس نے فلسفہ اقتصاد اور مختلف علوم پر جو کتابیں تحریر کیں وہ آج بھی مشرق اور مغرب کی درسگاہوں کا نصاب بن چکی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ آیت اللہ سید محمد باقر الصدر حضرت امام خمینی رحمت اللہ علیہ کے انقلابی افکار ان کے خلوص اور للہیت سے بہت زیادہ متاثر تھے اور آپ انقلاب اسلامی اور حضرت امام خمینی رحمۃ اللہ علیہ کے پر زور حامیوں میں سے تھے آپ نے صدامی آمریت کے خلاف قیام کیا اور آپ کی بہن شہیدہ سیدہ آمنہ بنت الہدیٰ جو خود اجتہاد کے درجہ پر فائز عالمہ اور فاضلہ شخصیت تھیں انہوں نے بھی آپ کے مشن اور تحریک کو آگے بڑھاتے ہوئے صدام کے جرائم اور اسلام دشمن اقدامات کی مخالفت کی اور راہ خدا میں شہادت پاٸی۔

انہوں نے کہا کہ حق ہمیشہ کامیاب رہتا ہے اور باطل کے مقدر میں شکست ذلت اور رسوائی ہے اسی لئے آج عالم اسلام اور عراق کے عظیم رہبر اور رہنما کے طور پر سید محمد باقر الصدر زندہ و تابندہ ہیں جب کہ صدام ذلت اور رسوائی کی علامت بن چکا ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
9 + 7 =