۱۶ آذر ۱۴۰۰ |۲ جمادی‌الاول ۱۴۴۳ | Dec 7, 2021
هفته وحدت

حوزہ/ حضرت رسالتمآب صلی اللہ علیہ والہ وسلم کے ایام ولادت اور ہفتہ وحدت ایک بہترین موقع ہے جس میں عالم اسلام اپنے اتحاد و بھائی چارے کا بخوبی مظاہرہ کر سکتا ہے خاص طور پر اس دور میں کہ جب اسلام اور رسول اسلام (ص) کے خلاف سازشیں عروج پر ہیں، عالم اسلام میں اتحاد و وحدت کی ضرورت اور زیادہ محسوس ہونے لگتی ہے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،ایران سمیت پوری دنیا میں ۱۲سے ۱۷ربیع الاول کے ایام کو ہفتہ وحدت کے طور پر منایا جاتا ہے۔ آج سے جشن عید میلاد النبی (ص) اور ہفتہ وحدت کا آغاز ہوگیا ہے جو انتہائی شان و شوکت کے ساتھ منایا جا رہا ہے۔

۱۲ربیع الاول کی مبارک تاریخ کی مناسبت سے ایران کے مختلف علاقوں میں اہل سنت کے ساتھ ساتھ شیعہ حضرات اور علمائے کرام، عید میلاد النبی کے جشن میں شریک ہیں اور نبی کریم حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی سیرت پاک پر ثابت قدم رہنے کا عہد کر رہے ہیں ۔

اہل سنت راویوں اور علما کے مطابق 12 ربیع الاول پیغمبراسلام کی ولادت باسعادت کی تاریخ ہے جبکہ شیعہ راویوں اور علما کے مطابق آنحضرت (ص) کی ولادت باسعادت کی تاریخ 17 ربیع الاول ہے۔اسی مناسبت سے بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی (رح) نے 12 سے17 ربیع الاول تک کے دورانیہ کو ہفتہ وحدت کا عنوان دیا تھا اور اس کے بعد سے ہر سال ایران اور پوری دنیا میں ان ایام میں ہفتہ وحدت منایا جاتا ہے۔

دوسری جانب پاکستان میں بھی ملک بھر میں ہفتہ وحدت اور سید المرسلین حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی ولادت باسعادت کا جشن مذہبی عقیدت و احترام اور جوش و خروش کے ساتھ منایا جارہا ہے۔سرکار دو جہاں نبی آخر الزماں حضرت محمد مصطفی  صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے جشن ولادت اور ہفتہ وحدت کی آمد کے موقع پر پاکستان میں محافل اور ریلیوں کا اہتمام کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ یہ ہفتہ، اسلامی دنیا میں اتحاد و اتفاق کی ضرورت پر پہلے سے زیادہ توجہ دینے کے لئے مناسب موقع ہے۔ ایسے حالات میں جب امت اسلامیہ پر چاروں طرف سے اور مختلف شکلوں میں اسلام دشمن طاقتوں کی جانب سے یلغار ہو رہی ہو، نبی رحمت (ص) سے منسوب ان ایام کی افادیت، اہمیت اور برکت پہلے سے زیادہ نمایاں ہوتی دکھاتی دیتی ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
4 + 2 =