۱۶ تیر ۱۴۰۱ |۷ ذیحجهٔ ۱۴۴۳ | Jul 7, 2022
مچھ ہزارہ

حوزہ/ شیعہ شناخت پہ قتل و غارت ریاستی رٹ پہ سوالیہ نشان ہے صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا،آخر شیعہ شناخت پہ قتل و غارت کا سلسلہ کیوں نہیں تھم سکا؟ واقعہ میں ملوث سہولت کاروں کو بے نقاب کرکے بلوچستان میں ٹارگٹڈ آپریشن کیا جائے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، بلوچستان کے علاقہ مچھ میں شیعہ شناخت پر کئی محب وطن پاکستانیوں کو دن دہاڑے قتل کردیا گیا جس پر لاہور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔احتجاجی مظاہرے میں جوانوں بزرگوں اور خواتین کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان اور مجلس وحدت مسلمین کے رہنماؤں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف دہشت گردی کے خلاف جنگ کی کامیابی کے دعوے کئے جاتے ہیں دوسری طرف آئے روز  محب وطن پاکستانیوں کی ٹارگٹ کلنگ ہوتی ہے اور قاتلوں کو سہولت کاروں سمیت بے نقاب نہیں کیا جاتا ہے۔آخر کب تک ہمیں شیعہ شناخت پرقتل کیا جائے گا۔

ان خیالات کا اظہار آئی ایس او پاکستان کے مرکزی صدر عارف حسین الجانی نے لاہور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہر ہ کے سامنے کیا۔

عارف حسن الجانی نے مزید کہا کہ ہم نے سیکڑوں جنازے اٹھائے مگر پُرامن احتجاج کیا ہم نے کسی صورت صبر کا دامن نہیں چھوڑا لیکن صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے۔ ہم قانون نافذ کرنے والوں سے سوال کرتے ہیں آخر کیا وجہ ہے کہ محب و طن پاکستانیوں کو شناخت کی بنیاد پر قتل کیا جاتا ہے اور سہولت کاروں کو بے نقاب نہیں کیا جاتا ہے۔ا

انہوں نے مزید کہا کہ قومی مفاد میں تحمل کو ہرگز کمزوری نہ سمجھا جائے، ملت تشیع پاکستان کی تاریخ خون سے سرخ ہے، ہم نے ہمیشہ صبر و استقامت سے ظالمین کا سامنا کیا ہے مرکزی صدر نے مطالبہ کیا کہ بلوچستان میں فی الفور دہشت گرد عناصر کے خلاف ٹارگٹڈ آپریشن کیا جائے، تاکہ پاکستان و اسلام دشمن عناصر کا خاتمہ کیا جاسکے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
3 + 1 =