۹ مهر ۱۴۰۱ |۵ ربیع‌الاول ۱۴۴۴ | Oct 1, 2022
نائیجیریا میں عاشورا کے جلوس پر حملہ، شیخ زکزاکی کے بھتیجے سمیت 6 عزادار شہید

حوزہ/ تحریک اسلامی نائیجیریا کے رہنما نے ایرانی خبر رساں ادارے سے گفتگو میں کہا کہ نائیجیریا کے شہر زاریا میں سیکورٹی اہلکاروں نے آج عاشورا کے جلوسوں میں شامل عزاداروں پر حملہ کیا جس کے نتیجے میں شیخ زکزاکی کے بھتیجے محسن یعقوب سمیت اب تک 6 عزادار شہید اور کئی زخمی ہوچکے ہیں۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،نائیجیریا کی اسلامی تحریک کے مطابق سیکورٹی اہلکاروں نے یوم عاشورہ کے جلوسوں میں شامل عزاداروں پر حملہ کردیا جس کے نتیجے میں کئی عزادار شہید اور زخمی ہوگئے۔ رپورٹ کے مطابق نائیجیریا کے مسلمانوں نے ملک کے مختلف علاقوں میں نواسہ رسول (ص) کی یاد میں جلوس ہائے عزا نکال کر امام عالی مقامؑ اور آپ کے اصحاب باوفا کی شہادت کو یاد کیا۔ یہ پہلی بار نہیں ہے جب نائیجیریا میں عزاداروں پر سیکورٹی اہلکاروں نے حملے کئے ہوں بلکہ گذشتہ برس بھی نائیجیریا کے سیکورٹی اہلکاروں نے زاریا شہر میں عاشورا کے جلوس پر حملہ کیا تھا جس میں کئی افراد شہید اور زخمی ہوگئے تھے۔

تحریک اسلامی نائیجیریا کے رہنما نے ایرانی خبر رساں ادارے سے گفتگو میں کہا کہ نائیجیریا کے شہر زاریا میں سیکورٹی اہلکاروں نے آج عاشورا کے جلوسوں میں شامل عزاداروں پر حملہ کیا جس کے نتیجے میں شیخ زکزاکی کے بھتیجے محسن یعقوب سمیت اب تک 6 عزادار شہید اور کئی زخمی ہوچکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اب تک کی اطلاع کے مطابق 6 عزادار شہید ہوگئے ہیں لیکن چونکہ بہت سے زخمیوں کی حالت نازک ہے، اس لئے شہید ہونے والوں کی تعداد میں مزید اضافہ ہو سکتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق نائیجیریا کے مسلمانوں نے ملک کے مختلف علاقوں میں نواسہ رسول (ص) کی یاد میں جلوس ہائے عزا نکال کر امام عالی مقامؑ اور آپ کے اصحاب باوفا کی شہادت کو یاد کیا۔ اس سے پہلے 2014ء کو یوم قدس کی ریلی پر نائیجیرین آرمی کی فائرنگ سے شیخ زکزاکی کے تین بیٹے اور 33 دیگر شیعہ افراد شہید ہوئے تھے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
9 + 2 =