۱۳ اسفند ۱۴۰۲ |۲۲ شعبان ۱۴۴۵ | Mar 3, 2024
ثاقب

حوزہ|یہ اُنؐ کی نعت نے بخشی ہیں عزتیں، ثاقبؔ!کہ ہم جہاں بھی رہے، حرفِ معتبر میں رہے

حوزہ نیوز ایجنسی|

نعتِ رسول مقبول صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم

رہِ حیات میں جب تک قدم سفر میں رہے

نقوشِ پائے محمدؐ مری نظر میں رہے

ملی ہے نعمتِ فکر و سخن تو واجب ہے

شرابِ عشقِ نبیؐ شیشۂ ہنر میں رہے

ہمارے گِرد تھی نعتوں کی چار دیواری

ہم ایسے تِیرہ جبیں روشنی کے گھر میں رہے

خدا کرے کہ ہوں تحلیل ہم ہواؤں میں

غبارِ جسم مدینے کی رہ گزر میں رہے

تمہارے ذکر کی لذت نے باندھ رکھا ہے

وگرنہ کون جہانِ فریب گر میں رہے

میں اُنؐ کے در سے زمانے سمیٹ کر لایا

یہ معجزے بھی مری عمرِ مختصر میں رہے

یہ اُنؐ کی نعت نے بخشی ہیں عزتیں، ثاقبؔ!

کہ ہم جہاں بھی رہے، حرفِ معتبر میں رہے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

[عباس ثاقبؔ]

تبصرہ ارسال

You are replying to: .