۲۶ فروردین ۱۴۰۳ |۵ شوال ۱۴۴۵ | Apr 14, 2024
اسکاٹ لینڈ

حوزہ/ اسکاٹ لینڈ کے مظاہرین نے فلسطین کی حمایت میں ایک بار پھر مظاہرہ کیا اور غزہ کی پٹی میں مستقل جنگ بندی کا مطالبہ کیا۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، ہفتے کے روز اسکاٹ لینڈ میں فلسطین کے حامیوں نے غزہ کی پٹی میں مستقل جنگ بندی کا مطالبہ کرتے ہوئے مظاہرہ کیا اور فلسطین کی حمایت اور صیہونی حکومت کی مذمت میں نعرے لگائے۔

خبر رساں ادارے ’پریس ایسوسی ایشن‘ کے مطابق اسکاٹ لینڈ کے شہر گلاسگو میں مظاہرین بوکانن اسٹریٹ پر جمع ہوئے اور انھوں نے پلے کارڈز اور بینرز اٹھائے ہوئے تھے جن پر ’اب جنگ بند کرو‘ کے نعرے درج تھے۔

صیہونی حکومت کے خلاف اسلامی مزاحمتی تحریک "حماس" کے " طوفان الاقصی " آپریشن کے آغاز اور غزہ کی پٹی پر زمینی حملے میں قابض فوج کی شکست کو 49 دن گزر جانے کے بعد، اسرائیلی کابینہ نے جنگ بندی اعلان کیا ، صہیونی حکومت نے بدھ کی صبح قطر اور مصر کی حکومتوں کی ثالثی سے جنگ بندی پر اتفاق کیا تھا۔

گلاسگو میں فلسطینیوں کے حامی مظاہرین نے فلسطینی پرچم لہرائے اور بعض مظاہرین نے "آپ دوبارہ نسل کشی کے لئے وقفہ نہیں لے سکتے" اور "دریا سے سمندر تک" جیسے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے۔

ایڈنبرا، ایبرڈین اور ڈنڈی سمیت اسکاٹ لینڈ کے کئی دوسرے شہروں میں بھی فلسطین کی حمایت اور صیہونی حکومت کے جرائم کی مذمت میں مظاہرے ہوئے۔

"اسکاٹ لینڈ فلسطین سولیڈیریٹی کمپین" کے نام سے مشہور اسکاٹ لینڈ کی حامی تنظیم نے "X" سوشل نیٹ ورک پر ایک پیغام میں لکھا: "اگرچہ نسل کشی میں ایک وقفہ آیا ہے، لیکن غزہ کے لوگ ناقابل تصور وحشت سے دوچار ہیں، انہیں ہمارے تعاون کی ضرورت ہے۔"

ہفتے کے روز ہزاروں برطانوی عوام نے ایک زبردست مظاہرہ کر کے فلسطینیوں کی حمایت کا اعلان کیا، دنیا بھر کے ممالک میں صیہونی مخالف جذبات میں اضافہ ہو رہا ہے۔

اسپین کے دوسرے سب سے زیادہ آبادی والے شہر بارسلونا کے حکام نے جمعہ کے روز صیہونی حکومت کے موقف کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے اس حکومت کے ساتھ تعلقات کو غزہ میں مستقل جنگ بندی سے مشروط کر دیا۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .