۱۴ تیر ۱۴۰۱ |۵ ذیحجهٔ ۱۴۴۳ | Jul 5, 2022
علامہ مقصود ڈومکی

حوزہ/ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان نے کہا کہ پاکستان کو اللہ نے ہر طرح کی نعمت سے نوازا ہے لیکن صالح قیادت کے فقدان کے باعث وطن عزیز پاکستان ان مشکلات پر قابو پانے سے قاصر ہے۔آج ہمیں بابائے قوم مادر ملت اور مصور پاکستان سے یہ عہد کرنا ہوگا کہ ہم ان کی دی ہوئی امانت یعنی وطن عزیز پاکستان کی تعمیر و ترقی کے لیے اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے 23 مارچ یوم تجدید عہد کے موقع پر کہا کہ برصغیر کے مسلمانوں نے طویل جدوجہد کے ذریعے انگریز سامراج کی غلامی سے نجات حاصل کی اس جدوجہد میں قائد اعظم محمد علی جناح رحمتہ اللہ علیہ اور حضرت حکیم الامت علامہ اقبال رحمۃ اللہ علیہ جیسے عظیم قائدین کی قیادت انہیں میسر آئی۔ علامہ اقبال رحمۃ اللہ علیہ نے اپنی شاعری کے ذریعے امت مسلمہ کو اور خصوصاً برصغیر کے مسلمانوں کو خواب غفلت سے بیدار کیا ان کی شاعری اور افکار ونظریات آج بھی امت مسلمہ کے لیے اور پاکستان کے عوام کے لئے ایک عظیم سرمایہ ہے حکیم الامت کے افکار اور نظریات ہمارے لیے آج بھی مشعل راہ ہیں جو ہمیں امریکی سامراج کی غلامی کی بجائے ایک آزاد اور خودمختار قوم کی حیثیت میں عزت اور وقار کے ساتھ زندہ رہنے کا درس دیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ 23 مارچ وہ تاریخی دن ہے کہ جب برصغیر کے مسلمانوں نے مصور پاکستان حکیم الامت ڈاکٹر محمد اقبال کے دیئے ہوئے نظریہ کے مطابق ایک آزاد اسلامی مملکت کا نقشہ پیش کیا۔ مزید کہا کہ آج پاکستان کو قائد کے اصولوں اور حکیم الامت علامہ اقبال کے نظریات کی روشنی میں تعمیر نو کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ پاکستان کا المیہ ہے ہے کہ انہیں حضرت قائد اعظم محمد علی جناح اور علامہ اقبال جیسے عظیم قائدین کے جانشین کے طور پر بونے اور چھوٹے قد اور چھوٹی فکر کے مفاد پرست سیاستدان رہبر کی صورت میں ملے جن کا کردار رہبر سے زیادہ راہزن کا ہے۔ پاکستان کو اللہ نے ہر طرح کی نعمت سے نوازا ہے لیکن صالح قیادت کے فقدان کے باعث وطن عزیز پاکستان ان مشکلات پر قابو پانے سے قاصر ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج ہمیں بابائے قوم مادر ملت اور مصور پاکستان سے یہ عہد کرنا ہوگا کہ ہم ان کی دی ہوئی امانت یعنی وطن عزیز پاکستان کی تعمیر و ترقی کے لیے اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے اور پاک وطن کو فرقہ واریت کی لعنت اور قوم پرستی کی نفرتوں سے پاک کرتے ہوئے ایک جدید ترقی یافتہ اسلامی ریاست بنانے میں اپنا کردار ادا کریں گے جہاں اقوام اور مذاہب کے درمیان محبت اور اخوت کا رشتہ قائم ہو۔

آخر میں کہا کہ مجلس وحدت مسلمین قائد اعظم اور حکیم الامت کے نظریات اور اصولوں کی پاسدار جماعت ہے جو وطن کی تعمیر و ترقی کے لیے اپنا مثبت کردار ادا کر رہی ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
3 + 6 =