۱۱ اسفند ۱۴۰۲ |۲۰ شعبان ۱۴۴۵ | Mar 1, 2024
علامہ سید باقر الحسینی

حوزہ/ صدر انجمن امامیہ بلتستان اور نائب خطیب مرکزی امامیہ جامع مسجد سکردو حجۃ الاسلام سید باقر الحسینی نے کہا کہ اگر کوئی مجرم ہے تو اسے عدالتوں میں پیش کیا جاے۔قانوں کے کٹھرے میں لائے بغیر غائب کر دینا قانونی اور غیر اسلامی عمل ہے ۔جس کی بہر پور مذمت کی جاتی ہے۔حکومت سے مطالبہ کیا جاتا ہے کہ فورا تمام لاپتہ افراد کو رہا کیا جائے ۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،صدر انجمن امامیہ بلتستان اور نائب خطیب مرکزی امامیہ جامع مسجد سکردو حجۃ الاسلام سید باقر الحسینی نے کہا کہ پاکستان کی سرزمین میں شیعہ افراد کا لاپتہ ہونا قابل تشویش ہے۔اگر کوئی مجرم ہے تو اسے عدالتوں میں پیش کیا جاے۔قانوں کے کٹھرے میں لائے بغیر غائب کر دینا قانونی اور غیر اسلامی عمل ہے ۔جس کی بہر پور مذمت کی جاتی ہے۔حکومت سے مطالبہ کیا جاتا ہے کہ فورا تمام لاپتہ افراد کو رہا کیا جائے ۔

مزید کہا کہ سالہا سال سے جبری طور پر پر لوگوں کو  لاپتہ کرنا ،ان کے گھرکے افراد سے ملاقات نہ کروانا،  قابل مذمت امر ہے۔

ہم ملک بھر میں جاری  شیعہ مسنگ پرسنز ایکشن کمیٹی کے احتجاجی دھرنوں کی بھر پور حمایت کرتے ہیں۔ اب تک عدلیہ کی جانب سےبھی جبری طور پر لاپتہ افراد کی بازیابی کو ممکن نہیں بنانا قابل مذمت ہے۔



 

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .