۲۷ مرداد ۱۴۰۱ |۲۰ محرم ۱۴۴۴ | Aug 18, 2022
امریکی فوجی

حوزہ/ کاظم غریب آبادی نے کہا کہ درحقیقت انسانی حقوق کی دھجیاں اڑانےوالے ہی انسانی حقوق کے علمبردار بنے ہوئے ہیں۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، ایران کے انسانی حقوق کمیشن کے سکریٹری کاظم غریب آبادی نے کہا ہے کہ پینٹاگون کی رپورٹ سے ظاہر ہوتا ہے کہ انسانی حقوق کی سب سے زیادہ خلاف ورزی کرنے والے وہ ہیں جو اس کے تحفظ کے لیے پوری دنیا میں شور مچاتے رہتے ہیں۔

انہوں نے ٹویٹ کیا اور کہا کہ دنیا میں انسانی حقوق کے تحفظ کا پرچم ان لوگوں نے بلند کر رکھا ہے جو اس کی سب سے زیادہ خلاف ورزی کرتے ہیں۔ امریکہ اور مغربی ممالک کی پالیسیاں انسانی حقوق کے حوالے سے مکمل طور پر متضاد ہیں۔

وہ ہمیشہ ان ممالک کے انسانی حقوق پر بحث کرتے ہیں جو مغربی ممالک کے زبردستی تسلط کے خلاف باتیں کرتے ہیں تاکہ اپنے ممالک کی رائے عامہ اور میڈیا کی توجہ اپنے وطن سے ہٹا سکیں۔

قابل ذکر ہے کہ امریکی وزارت دفاع پینٹاگون کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ امریکی فوج کے اندر جنسی زیادتی اور عصمت دری کے متعدد واقعات پیش آئے ہیں۔ پینٹاگون کی تازہ ترین رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ گیارہ برسوں کے دوران امریکی فوج میں ایک لاکھ پانچ ہزار ریپ اور جنسی زیادتی کے 509 کیسز درج کیے گئے ہیں۔ اس رپورٹ کے مطابق امریکی فوج کے ہزاروں فوجیوں پر ریپ اور جنسی تشدد کے الزامات عائد کیے گئے ہیں۔

خاص بات یہ ہے کہ امریکی وزارت دفاع پینٹاگون کے مطابق امریکی فوج کے ذریعہ کئے گئے جنسی تشدد کے زیادہ تر واقعات یا تو خوف کی وجہ سے یا انتقامی کارروائی کی وجہ سے ظاہر نہیں ہو پاتے۔

بتایا گیا ہے کہ جنسی ہراسانی کی اطلاع دینے والے 68 فیصد فوجیوں کو اپنے کمانڈر کی جانب سے برے برتاؤ کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ بہت سے فوجی اس معاملے کو آگے بڑھانے یا اپنے اعلیٰ افسر سے شکایت کرنے سے ڈرتے ہیں۔ اس طرح، امریکی فوج میں عصمت دری اور جنسی تشدد کے بہت سے واقعات درج نہیں ہوتے ہیں۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
6 + 7 =