۴ مهر ۱۴۰۱ |۲۹ صفر ۱۴۴۴ | Sep 26, 2022
سعودی عرب میں شیعہ شہریوں کی گرفتاری

حوزہ/سعودی عرب کی سیکورٹی فورسز نے سعودی عرب کے مشرقی علاقوں میں گرفتاریوں کے نئے سلسلے کا آغاز کر دیا ہے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، سعودی سیکیورٹی فورسز نے قطیف، الاحساء اور الدمام میں چھاپے مار کر سارہ العلی کو الاحساء سے بغیر کسی جرم یا مقدمے کے گرفتار کر لیا ہے اور دینی مدرسے کے استاد عبدالمجید بن حاجی الاحمد کو بھی گرفتار کرلیا ہے۔

ذرائع کے مطابق، سعودی فورسز نے حسین رجب، حسین المطوع اور موسیٰ علی الخنیزی کو بھی گرفتار کر لیا ہے آل سعود کے حزب اختلاف کے ذرائع نے کہا کہ ان گرفتاریوں کی وجہ ان لوگوں کی میڈیا سرگرمی تھی کیونکہ وہ سوشل نیٹ ورکس اور نیوز پلیٹ فارمز میں سرگرم تھے اور ان کا نقطۂ نظر سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی پالیسی سے متصادم تھا۔

ذرائع نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ گرفتار افراد سے ان کے اہل خانہ کا کوئی رابط نہیں ہے اور سعودی افواج نے ان کے تمام مواصلاتی ذرائع کو اپنے قبضے میں لے لیا ہے۔

مذکورہ ذرائع نے اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہ آل سعود کے حکام اپنے ہی شہریوں کو آزادانہ زندگی گزارنے سے روک رہے ہیں، کہا کہ سعودی عرب کے کم عمر ترین سیاسی قیدی "مرتجی قریریص” ہے جس پر ہمیں بہت ہی افسوس ہے۔

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
3 + 5 =