۴ اردیبهشت ۱۴۰۳ |۱۴ شوال ۱۴۴۵ | Apr 23, 2024
روضہ مبارک حضرت عباس(ع) کے گنبد کا علم کارگل میں موسمِ احزان کا اعلان کر رہا ہے

حوزہ/ ہندوستان کے انتہائی شمالی علاقے کارگل میں ایام عزاء کی ابتدا کا باقاعدہ اعلان کرنے کے لیے دسیوں ہزار مومنین کی موجودگی میں روضہ مبارک حضرت عباس (علیہ السلام) کے گنبد کا علم بلند کیا گیا کہ جس کے بعد اہل کارگل نے حسینی سوگ اور عزائی تقریبات آغاز کیا تاکہ وہ امام حسین(ع) اور ان کے اہل و عیال اور اصحاب کی شہادت کو یاد کر کے انھیں خراج عقیدت پیش کریں۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، ہندوستان کے انتہائی شمالی علاقے کارگل میں ایام عزاء کی ابتدا کا باقاعدہ اعلان کرنے کے لیے دسیوں ہزار مومنین کی موجودگی میں روضہ مبارک حضرت عباس (علیہ السلام) کے گنبد کا علم بلند کیا گیا کہ جس کے بعد اہل کارگل نے حسینی سوگ اور عزائی تقریبات آغاز کیا تاکہ وہ امام حسین(ع) اور ان کے اہل و عیال اور اصحاب کی شہادت کو یاد کر کے انھیں خراج عقیدت پیش کریں۔

کارگل میں جمیعت علماء اثناء عشریہ کے سربراہ شیخ ناظر مہدی محمدی نے بتایا ہے کہ گزشتہ چند سے اس علم کی پرچم کشائی کی یہ تقریب ہر سال ابتداءِ محرم میں منعقد ہو رہی ہے، اور اس کا آغاز اس وقت ہوا کہ جب چند سال پہلے کارگل شہر نے روضہ مبارک حضرت عباس(ع) کی طرف سے منعقد کیے جانے والے ساتویں سالانہ جشن امیر المومنین(ع) کی میزبانی کا اعزاز حاصل کیا اور اسی سال یہ مبارک علم اہل کارگل کو ہدیہ کیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اہل کارگل کے لیے نفوس اور عقول میں یہ علم اپنے عظیم ترین اثرات کے ساتھ بلند ہے اور اب یہ ہمارے مراسیم عزاء کا حصہ بن چکا ہے لہذا ہم ایام عاشوراء اور اسی طرح ديگر آئمہ(ع) کے ایام شہادت میں اسے بلند کرتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ اس علم کو بلند کرنے سے پہلے اس علم کے ساتھ مارچ کی صورت میں پورے شہر کا چکر لگایا جاتا ہے اور پھر اس کے بعد اسے ایک جمع غفیر کی موجودگی میں حسینیہ اثنا عشریہ میں لہرایا جاتا ہے۔

قمر عشیرہ کے مبارک مرقد سے آیا ہوا یہ مقدس علم (لبّيك يا حسين) اور (لبّيك يا عبّاس) کی بلند صداؤں، بہتی ہوئی آنکھوں اور ماتم کی پہاڑوں سے ٹکراتی آوازوں کے درمیان بلند کیا جاتا ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .