۳۰ اردیبهشت ۱۴۰۱ |۱۸ شوال ۱۴۴۳ | May 20, 2022
ملعون وسیم رضوی کا نیا فتنہ، وزیر اعظم مودی سے نئی اپیل کردی

حوزہ/ سابق چیئرمین وسیم رضوی نے آج وزیر اعظم نریندر مودی کو ایک خط لکھ کر مدارس اسلامیہ میں ترمیم شدہ قرآن پڑھانے کے لئے قانون بنانے کی اپیل کی ہے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،لکھنو/وقتا فوقتا شریعت اسلامیہ کے سلسلے میں بے بنیاد و بے تکے دعوؤں کے ذریعہ اپنا مذاق آپ بننے والے شیعہ وقف بورڈ کے سابق چیئرمین وسیم رضوی نے آج وزیر اعظم نریندر مودی کو ایک خط لکھ کر مدارس اسلامیہ میں ترمیم شدہ قرآن پڑھانے کے لئے قانون بنانے کی اپیل کی ہے۔

وسیم رضوی نے وزیر اعظم نریندر مودی کو لکھے اپنے خط میں دلیل دی ہے کہ قرآن مجید میں مبینہ 26آیتیں ایسی ہیں جو نعوذباللہ وحی الہی کے ذریعہ نازل نہیں ہوئی ہیں۔ کیونکہ ان آیات میں دہشت گردی،علیحدگی پسندی اور سخت گیرذہنیت کو فروغ دیتی ہیں اور یہی وجہ ہے کہ پوری دنیا میں نام نہاد مسلم دہشت گردی اپنے عروج پر ہے۔

وسیم رضوی نے دعوی کیا ہے کہ کافی غوروخوض کے بعد انہوں نے قرآن مجید کو نئی ترتیب دی ہے جس میں سے ان 26آیتوں کو ہٹا دیا ہے۔مسٹر رضوی نے وزیر اعظم سے اپیل کی ہے کہ نئی ترتیب کے مطابق مدارس میں قرآن کو پڑھانے کے لئے نظام کو یقینی بنائے جانے سے متعلق ہدایت دینے کی مہربانی کریں۔

وسیم رضوی نے مزید کہا ہے کہ موجودہ قرآن مجیدموجودہ ترتیب کے اعتبار سے ٹھیک نہیں ہے۔دوسرے کے مذہب سے نفرت پیدا ہو، اپنے مذہب کو صحیح بتا کر دوسرے مذہب کی بے عزتی کیا جانا یہ ملکی مفاد میں قطعی مناسب نہیں ہے اور غیر آئینی ہے۔ ہندوستان کو اس میں پہلے کرنا اس لئے ضروری ہے کیونکہ ہندوستان میں مسلمانوں کے ساتھ دیگر مذاہب کے لوگ بھی رہتے ہیں۔

سابق چئیر مین نے کہا کہ انہوں نے اس ضمن میں سپریم کورٹ میں عرضی داخل کی تھی جسے بغیر کوئی تفصیلی ہدایت کے خارج کردیا گیا۔ اسی عرضی کو دوبارہ سماعت کے لئے سپریم کورٹ میں دوبارہ داخل کی گئی ہے۔جو کہ ابھی التوا کا شکار ہے۔

قابل ذکر ہے کہ اس سے پہلے وسیم رضوی نے سپریم کورٹ میں ایک عرضی داخل کر کے قرآن مجید سے 26آیات کی منسوخی کا حکم دینے کا مطالبہ کیا تھا جس پر سماعت کرتے ہوئے عدالت عظمی نے مسٹر رضوی پر 50ہزار روپئے کا جرمانہ عائد کرتے ہوئے عرضی کو خارج کردیا تھا۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
4 + 2 =