۸ تیر ۱۴۰۱ |۲۹ ذیقعدهٔ ۱۴۴۳ | Jun 29, 2022
محترمہ سائرہ ابراہیم

حوزہ/ ہم ہمارے شہداء کا خون رائیگاں نہیں جانے دیں گے، ہم پاکستان میں شہیدوں کے وارث ہیں یہ کیسے ممکن ہے کہ ہم سے پوچھے بغیر کوئی شہداء کے قاتلوں سے مذاکرات کرے؟۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،گلگت/ امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان شعبہ طالبات گلگت کی جانب سے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ایک پروقار مجلس عزاء منعقد کی گئی جس میں عالمات اور ذاکرات کے علاوہ مختلف تنظیموں اور انجمنوں کی سرکردہ خواتین نے شرکت کی ۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ خواتین کی مرکزی سیکریٹری یوتھ محترمہ سائرہ ابراہیم نے آئی ایس او طالبات کی دعوت پر اس مجلس عزاء میں خصوصی طور پر شرکت کی اور خطاب بھی کیا ۔ خواتین کی ایک کثیر تعداد اس مجلس عزاء میں شریک تھی ۔

محترمہ سائرہ ابراہیم نے شہدائے ملت ،شہدائے وطن ،شہدائے گلگت وبلتستان ،شہدائے پشاور ،شہدائے کوئٹہ ،شہدائے مچھ ،شہدائے کراچی ،شہدائے شکارپور ،شہدائے لاہور ،شہدائے بابوسر ،شہدائے اورکزئی ،شہدائے پاراچنار ،شہدائے چلاس ،شہدا ملتان ،شہدائے امامیہ اسٹوڈنٹس اور شہید علامہ ضیاءالدین موسوی کو خراج عقیدت پیش کیا اور کہا کہ ہم ان شہداء کا خون رائیگاں نہیں جانے دیں ۔ ہم پاکستان میں شہیدوں کے وارث ہیں یہ کیسے ممکن ہے کہ ہم سے پوچھے بغیر کوئی شہداء کے قاتلوں سے مذاکرات کرے ؟

انہوں نے مزید کہا کہ شہیدوں کا لہو طاقتور ہے مگر اس کے لئے ہمیں بیداری ،آگاہی اور بصیرت کی ضرورت ہے جیسا کہ قرآن نے کہا کہ تمہیں شعور نہیں وہ شہداء کیسے زندہ ہیں ؟ پس شہداء کے لہو سے وفا ! اسی صورت ممکن ہے کہ ہم بیدار ہوں ،آگاہی اور بصیرت حاصل کرلیں ! جب ہم اس مقام پر پہنچ جائیں گے تو ہم شہداء کے اصلی قاتلوں کو پہنچان لیں گے اور جب قاتلین عاشقان خدا کو پہنچان لیا تو کبھی بھی خاموش نہیں بیٹھیں گے ۔ ھیھات من الذلہ ۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
7 + 1 =