۲۰ مرداد ۱۴۰۱ |۱۳ محرم ۱۴۴۴ | Aug 11, 2022
تحریک آزادی قدس کانفرنس

حوزہ/ کراچی میں منعقدہ تحریک آزادی قدس کانفرنس: موجودہ حکمران پاکستان کو عرب ریاستوں کے نقش قدم پر چلانے کی کوشش کررہے ہیں تاکہ ان کی طرح پاکستان بھی اسرائیل کو تسلیم کرلے لیکن ہم یہ باور کروادینا چاہتے ہیں کہ پاکستانی عوام اسرائیل کو تسلیم کرنے کے معاملے پر قائد اعظم کے فرمان سے ہر گز روح گردانی نہیں کریں گے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،کراچی/ موجودہ حکمران پاکستان کو عرب ریاستوں کے نقش قدم پر چلانے کی کوشش کررہے ہیں تاکہ ان کی طرح پاکستان بھی اسرائیل کو تسلیم کرلے لیکن ہم یہ باور کروادینا چاہتے ہیں کہ پاکستانی عوام اسرائیل کو تسلیم کرنے کے معاملے پر قائد اعظم کے فرمان سے ہر گز روح گردانی نہیں کریں گے ان خیالات کا اظہارتحریک آزادی القدس پاکستان کی جانب سے کراچی پریس کلب میں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شیعہ علماء کونسل صوبہ سندھ کے علامہ ناظر عباس تقوی، مرکزی صدر آئی ایس او عارف حسین الجانی ، رہنما شیعہ ایکشن کمیٹی علامہ مرزا یوسف حسین ، رہنما ذاکرین امامیہ علامہ نثار قلندری،رکن نظارت آئی ایس او مولانا عقیل موسیٰ،رہنما فلسطین فاونڈیشن صابر ابو مریم نے کیا۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آئی ایس او کے مر کزی صدر عارف حسین الجانی نے کہا کہ رواں سال عالمی یوم القدس 24 رمضان المبارک کو منایا جائیگا اس سلسلے میں ملک بھر میں تحریک آزادی قدس کی جانب سے ریلیاں اور کانفرنس منعقد کی جائیں گی ملک بھر میں 50سے زائد ریلیاں نکالی جائیں گی جبکہ مرکزی آزادی بیت المقدس ریلی کراچی میں نمائش تا تبت سینٹر نکالی جائیگی جس میں سیاسی و مذہبی جماعتوں کے رہنماء خطاب کریں گے۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ ناظر عباس تقوی نے کہا کہ مسئلہ فلسطین کئی دہائیوں سے عالمی مسئلہ بنا ہوا ہے لیکن عرب حکمرانوں کی کم عقلی اور استعماری قوتوں کے ہاتھوں غلامی کا تاج پہننے کے شوق نے مسئلہ فلسطین کو علاقائی مسئلہ بنادیا ہے اور اس کی حساسیت کو کم کرنے کی کوشش کی لیکن جب تک پاکستان میں و دیگر اسلامی ممالک میں انسانیت کے حقیقی علمبردار موجود ہیں اس مسئلے کو کسی صورت دبنے نہیں دیں گے کیونکہ مسئلہ فلسطین اسلامی مسئلے کے ساتھ ساتھ انسانیت کا مسئلہ بھی ہے بیت المقدس مسلمانوں کا قبلہ اول ہے ، اور اسی قبلہ اول کی اہمیت کو اجاگر کرنے کے لیے امام خمینی نے جمعۃ الوداع کو یوم القدس منانے کا اعلان کیاتھااس فرمان پر لبیک کہتے ہوئے دنیا بھر میں ہر سال یوم القدس منایا جاتا ہے جو کہ صہیونی ریاست کے منہ پر ایسا تماچہ ہے جسکی گونج دنیا بھر میں سنی جاسکتی ہے۔

علامہ مرزا یوسف کا کہنا تھا کہ بحیثیت پاکستانی ہمارا یہ دینی اور اسلامی اور قومی فریضہ ہے کہ ہم فلسطین اور انکی تحریک کی حمایت کریں ،قائد اعظم محمد علی جناح  کا اسرائیل کو تسلیم نہ کرنے کا بیان مسئلہ فسلطین کی اہمیت کو اجاگر کرتا ہے ۔ لہذاٰ گر کوئی یہ سمھجتا ہے کہ پاکستان مسئلہ فلسطین سے خیانت کریگا اور ظالم صہیونی ریاست کو قبول کرلے گا تو یہ انکی بھول ہے۔

صابر ابو مریم نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں مسئلہ فلسطین اور کشمیر کے خلاف بات کرنا قومی جرم قرار دیا جائے اور یوم القدس کو باقاعدہ سرکاری طور پر منانے کا اعلان کیا جائے اور اس مسئلہ فلسطین کے حق میں پارلیمنٹ میں قرار داد پیش کی جائے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
3 + 0 =