۸ اسفند ۱۴۰۲ |۱۷ شعبان ۱۴۴۵ | Feb 27, 2024
آزادی فلسطین مارچ

حوزه/ کوہاٹ پاکستان میں فلسطین کی حمایت اور غاصب اسرائیل کے خلاف زبردست احتجاجی ریلی کا انعقاد ہوا جس میں شیعہ سنی عمائدین سمیت عوام کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

حوزه نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، آزادی فلسطین مارچ سے خطاب کرتے ہوئے ایم ڈبلیو ایم پاکستان کے چیئرمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ بانی پاکستان نے غاصب اسرائیل کو ناجائز ریاست کہا تھا، لہٰذا ہم اس غاصب صہیونی ریاست کو کبھی تسلیم نہیں کریں گے۔

آزادی فلسطین مارچ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے مزید کہا کہ ہمارے ملک میں غاصب اسرائیل کو تسلیم کرنے کی بات کرنے والے بدبخت حکمران امریکہ کے نمکخوار ہیں، لیکن پاکستان کی شجاع عوام ہر حال میں اپنے مظلوم فلسطینیوں بھائیوں کے ساتھ کھڑی ہے۔

جب تک غاصب اسرائیل کا وجود باقی ہے، جنگ جاری رہے گی، مقررین

انہوں نے مزید کہا کہ ظالموں کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرنا خدا کا محبوب ترین فعل و عمل ہے، یہ بات واضح ہو چکی ہے کہ غاصب اسرائیل کا کوئی مستقبل نہیں ہے، بلکہ مستقبل فلسطینیوں کا ہے، ہر گزرتے دن کے ساتھ اسرائیل اپنے منطقی انجام کی طرف تیزی سے بڑھ رہا ہے، مقاومت اور مزاحمت کا بیانیہ جیت رہا ہے، اسرائیل اور اس کے سرپرست رائے عامہ کی جنگ ہار چکے ہیں۔

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے فروری میں منعقد ہونے والے انتخابات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں جن جماعتوں کو امریکی و اسرائیلی پشت پناہی حاصل ہے، انہیں عوام کی بھرپور حمایت سے شکست دیں گے۔

جماعت اہل حرم پاکستان کے سربراہ علامہ مفتی گلزار احمد نعیمی نے کہا کہ عظیم الشان مارچ میں شریک تمام شرکاء کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، جو فلسطین کے ساتھ کھڑا ہے وہ حق اور جو غاصب اسرائیل کے ساتھ کھڑا ہے وہ باطل کے ساتھ ہے، ہمارے حکمرانوں نے فلسطینی کاز پر انتہائی مکروہ و قابل نفرت کردار ادا کیا ہے، ہماری غیرت مند پاکستانی قوم اہل فلسطین اور اہل غزہ کے ساتھ کھڑی ہے، پوری دنیا میں امریکی ڈالر اور اسلحہ دہشت گردی کے لئے استعمال ہوتا ہے، امن و انسانی حقوق کے نام نہاد یورپی حکمران پوری دنیا میں دہشت گردی کے ذمہ دار ہیں۔

جب تک غاصب اسرائیل کا وجود باقی ہے، جنگ جاری رہے گی، مقررین

سید ناصر عباس شیرازی نے کہا کہ کربلا کے ماننے والے شہادت تو قبول کر سکتے ہیں، لیکن کسی ظالم کے سامنے جھک نہیں سکتے، امریکہ اور نتن یاہو غزہ میں اپنے اہداف کے حصول میں مکمل طور پر ناکام ہوئے ہیں، حماس کی شرائط پر عارضی جنگ بندی امریکہ و اسرائیل کی بدترین شکست ہے۔ ہم ہر ظالم کے دشمن ہیں اور ہر مظلوم کے حامی وناصر ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم اپنے وطن پاکستان کو بھی امریکی و اسرائیلی کالونی نہیں بننے دیں گے، پاکستانی حکمرانوں کا فلسطین کے دو ریاستی حل کا راگ الاپنا پاکستان کے نظریہ کے سراسر منافی ہے۔

علامہ خورشید انور جوادی نے کہا کہ جب تک اسرائیل کا وجود باقی ہے ہماری جنگ جاری رہے گی، جس طرح جنگ خیبر میں حضرت امام علی علیہ السّلام نے یہودیوں کے مرکز کو نیست ونابود کیا تھا ہم بھی اس غاصب صہیونی ریاست کا خاتمہ کر کے دم لیں گے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .