۲ مرداد ۱۴۰۳ |۱۶ محرم ۱۴۴۶ | Jul 23, 2024
هندوها برای تخریب مسجد در مجاورت معبد دست به کار شدند

حوزہ/اے آئی ایم آئی ایم کے صدر اسد الدین اویسی نے گلبرگہ میں عوامی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مہاتما گاندھی کا لگاؤ ہر مذہب و ملت سے تھا۔ انہوں نے ہمیشہ سچائی کے راہ پر چلنے کی کوشش کی۔ گاندھی جی نے کبھی کسی مذہب کی مخالفت نہیں کی۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،کرناٹک کے گلبرگہ شہر میں ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے اسد الدین اویسی نے کہا کہ بھارت میں دہشت گردی کا آغاز ناتھور ام گوڈسے سے ہوا۔ مہاتما گاندھی جی کو قتل کر نے کی کوشش پانچ مر تبہ کی گئی، آخر کار ناتھو رام گووڈسے اس مقصد میں کامیاب ہوگیا۔

ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ مہاتما گاندھی کا قتل ملک کے ہندوؤں اور مسلمان میں نفرت پھیلانے نے کے مقصد سے کیا گیا تھا تاکہ اس ملک کو ہندو راشٹریہ بنایا جا سکے۔ اسی مقصد کے تحت گاندھی جی کے قتل کا الزام مسلمانوں پر لگانے کی سازش کی گئی تھی مگر سچائی سامنے آگئی کہ گاندھی جی کا قتل کرنے والا کوئی مسلمان نہیں، ناتھو رام گوڈسے ہے۔

اویسی نے کہا کہ اس طرح ملک میں اب تک مسلمانوں کو نشانہ بنانے کی کوشش کی جارہی ہے۔

اسدالدین اویسی نے کہا کہ یہ ملک ایک سیکولر ملک ہے۔ یہاں پر ہر مذہب کی عوام کو پوری طرح سے اپنے اپنے مذہب کے مطابق زندگی گزارنے کا پورا حق ہے۔ مگر بی جے پی حکومت ملک کے ہر معاملے میں دخل اندازی کر رہی ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .