۲۹ اردیبهشت ۱۴۰۱ |۱۷ شوال ۱۴۴۳ | May 19, 2022
دہلی؛ انسانی ہمدردی کیلئے کووڈ سینٹر میں تبدیل ہوئی مسجد

حوزہ/ دہلی میں آکسیجن کی قلت کی وجہ سے فی الحال مسجد میں آکسیجن کی سہولت دستیاب نہیں ہے لیکن امید ہے کہ جلد ہی سبھی بیڈز کو آکسیجن سلنڈر کے ساتھ شروع کیا جائے گا۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،حالیہ کورونا عالمی وباء کے دوران ہندؤں اور مسلمانوں نے اپنے اپنے مذہبی عبادت خانوں کو بھی مریضوں کی سہولیات کیلئے کھول دیاہے۔ہندوستان میں ایسی سینکڑوں مثالیں ہیں جہاں مذہبی مقامات پر کورونا مریضوں کا علاج کیا جارہا ہے۔ اسی طرح کا انسانی خدمت کا جذبہ ہندوستان کی دارالحکومت دہلی سے بھی سامنے آیا ہے، جہاں کی مسجد کو کووڈ سینٹر میں تبدیل کرکے اس میں کورونا مریضوں کا علاج کیا جارہا ہے۔

نئی دہلی کے گرین پارک میں واقع مسجد کے اندر 10 بیڈز کا کووڈ آئیسولیشن سینٹر کا قیام کیا گیا ہے حالانکہ دہلی میں آکسیجن کی قلت کی وجہ سے فی الحال مسجد میں آکسیجن کی سہولت دستیاب نہیں ہے لیکن امید ہے کہ جلد ہی سبھی بیڈز کو آکسیجن سلنڈر کے ساتھ شروع کیا جائے گا۔

گرین پارک پر واقع اس مسجد کا خرچ انتظامیہ کمیٹی ہی برداشت کرتی ہے۔ تاہم جب اس مسجد کو آئیسولیشن سینٹر میں تبدیل کرنے کی بات ہوئی تو مقامی ایم ایل اے اور ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ سے بھی اس کی منظوری لی گئی تھی تاکہ کوئی پریشانی پیش نہ آئے۔

واضح رہے کہ دہلی میں کسی مسجد کو آئیسولیشن سینٹر میں تبدیل کرنے کی اس پہل کی کافی پذیرائی ہو رہی ہے۔ اس سے قبل دہلی کی کسی بھی مسجد کو آئیسولیشن سینٹر میں تبدیل نہیں کیا گیا تھا۔ البتہ گجرات میں ضرور ایک مسجد کورونا کے مریضوں کی خدمت میں مصروف ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
5 + 12 =