۸ تیر ۱۴۰۱ |۲۹ ذیقعدهٔ ۱۴۴۳ | Jun 29, 2022
علامہ مقصود ڈومکی

حوزہ/ افغانستان کے اندر تسلسل کے ساتھ شیعہ اور ہزارہ کی نسل کشی پر ہمیں شدید تشویش ہے۔ امریکا شام اور عراق میں مسلسل شکست کے بعد اب ایک دفعہ پر افغانستان کو بدامنی کی طرف دھکیل رہا ہے جو کہ انتہائی افسوسناک ہے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے کابل کے ایک تعلیمی ادارے سید الشہداء گرلز اسکول میں دہشتگردی کے المناک سانحے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس وقت دہشت گرد افغانستان میں بے گناہ انسانوں کو مسلسل اپنے بم دھماکوں اور دھشت گردی کا نشانہ بنا رہے ہیں افغان حکومت اور قابض امریکی افواج کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ افغانستان کے عوام کو امن اور امان فراہم کریں۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان کے اندر تسلسل کے ساتھ شیعہ اور ہزارہ کی نسل کشی پر ہمیں شدید تشویش ہے۔ امریکا شام اور عراق میں مسلسل شکست کے بعد اب ایک دفعہ پر افغانستان کو بدامنی کی طرف دھکیل رہا ہے جو کہ انتہائی افسوسناک ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم افغان عوام ہزارہ قبیلہ اور متاثرہ خاندانوں سے اپنی ہمدردی کا اظہار کرتے ہیں اور ان کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔

مجلس وحدت مسلمین ہر طرح کی دہشت گردی کے خلاف ہے اور وہ امن اور اتحاد کی علمبردار ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک تعلیمی ادارے کو دہشتگردی کا نشانہ بنا کر دہشت گردوں نے یہ ثابت کر دیا کہ وہ اسلام انسانیت اور علم کے دشمن ہیں اور اب تک دہشتگردی کے تمام تر سانحات کے پیچھے عالمی استکباری قوتوں کے ہاتھ نمایاں ہیں جو افغانستان کو ایک دفعہ پھر خاک و خون میں نہلا رہے ہیں۔

افغانستان میں شیعہ و ہزارہ کی نسل کشی پر ہمیں شدید تشویش ہے، علامہ مقصود ڈومکی

افغانستان میں شیعہ و ہزارہ کی نسل کشی پر ہمیں شدید تشویش ہے، علامہ مقصود ڈومکی

افغانستان میں شیعہ و ہزارہ کی نسل کشی پر ہمیں شدید تشویش ہے، علامہ مقصود ڈومکی

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
2 + 8 =