۳۱ اردیبهشت ۱۴۰۱ |۱۹ شوال ۱۴۴۳ | May 21, 2022
آغا علی رضوی

حوزہ/ مجلس وحدت مسلمین کے بیباک قائد نے کہا کہ یوم القدس دنیا بھر کے مظلوموں کی داد رسی اور ظالم و جابر حکمرانوں اور ریاستوں کیخلاف آواز بلند کرنے کے حوالے سے ایک شاہکار استعارہ ہے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،سکردو/صوبائی سکریٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین آغا علی رضوی نے یوم القدس کی عظیم الشان ریلی سے خطاب کرتے ہیں کہا کہ امریکا اور اسرائیل کے مظالم کا آغاز ہوچکا ہے، عالمی استکباری طاقتوں بالخصوص امریکہ اور اسکی ناجائز اولاد اسرائیل اپنی تمام تر کوششوں کے باوجود شام ، عراق ، یمن ، لبنان اور فلسطین میں شکست کھا کر ہزیمت اٹھانے پر مجبور ہیں۔ مشرق وسطی کے جن کمزور ممالک پر سات دہائیوں سے مظالم کے پہاڑ ڈھاتے رہے اب انہی ممالک سے غاصب ریاست کو جوابی حملوں میں جدید میزائلوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ پوری دنیا جانتی ہے مقاومتی بلاک کی سرپرستی قوت ایمانی سے سرشار بابصیرت قیادت کررہی ہے جو دنیا بھر کے مظلومین کو عزم و ہمت عطا کرنے میں اپنی مثال نہیں رکھتا۔

مجلس وحدت مسلمین کے بیباک قائد نے کہا کہ یوم القدس دنیا بھر کے مظلوموں کی داد رسی اور ظالم و جابر حکمرانوں اور ریاستوں کیخلاف آواز بلند کرنے کے حوالے سے ایک شاہکار استعارہ ہے۔

 اپنے خطاب میں انہوں نے ملکی اور گلگت بلتستان کے اہم امور پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم گلگت بلتستان کو با اختیار سیٹ اپ کے وعدے پر حکومت وقت کیساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ پر راضی ہوئے ، علاقے کے محکوم عوام کی امنگوں کیمطابق با اختیار سیٹ اپ کے اس وعدے کو ہر حال میں عملی جامہ پہنانا ہمارا ہدف ہے جس سے کسی صورت ہم پیچھے نہیں ہٹنے والے۔ وزیر اعظم پاکستان کیطرفسے گلگت بلتستان کیلئے اسپیشل پیکیج کا ہم خیر مقدم کرتے ہوئے امید کرتے ہیں کہ یہ اعلان اعلان کی حد تک نہیں رہنا چاہئے۔ عملدرآمد کرنا حکومت کی زمہداری ہے اور ہم ہر صورت ان اعلانات کو عملی ہوتا ہوا دیکھنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ گلگت بلتستان کا موجودہ وزیر اعلی باصلاحیت ، قابل اور با اعتماد شخصیت کے مالک ہیں ان سے بہت ساری امیدیں وابستہ ہیں کہ وہ علاقے اور عوام کی تعمیر و ترقی کیلئے ہر ممکنہ کوشش کرنے سے دریغ نہیں کرینگے۔

آغا علی رضوی نے یہ بھی واضح کیا عوام اور علاقے کیساتھ کئے گیے ہر وعدے کو عملی جامہ پہنانا لازمی ہے، کسی صورت بھی عوام سے خیانت کی گنجائش نہیں، بلتستان خصوصا سکردو کے مسائل و مشکلات کا جلد از جلد حل نکالنے کا مطالبہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انتظامیہ لاوڈشیڈنگ کے خاتمے کیلئے کردار ادا کریں ، یونیورسٹی کے اندر میرٹ کیخلاف سفارش اور اقربا پروری کی داستانیں سننے کو مل رہی ہیں، ہم ایسا ہرگز برداشت نہیں کریں گے، شہر میں سڑکوں کی معیاری تعمیر کو یقینی بنائی جائے ایسا نہ ہونے کی صورت میں ٹھیکیداروں کیخلاف ہر حد تک جاییں گے۔ اپنی تقریر میں آغا علی رضوی نے مزید کہا کہ بلتستان ڈویژن کے وزرا وزارتوں پر خوش باش ہوکر مطمئن نا ہوں ، علاقے اور عوام کی مشکلات کیلئے کردار ادا کرنا انکا فریضہ ہے۔

دوران خطابت انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے علمائے کرام اور ملی تنظیمیں مسایل کے حل اور عوامی امنگوں کی ترجمانی کیلئے اسی طرح ہم آواز ہو جائیں جس طرح اس یوم القدس کی ریلی اور جلسے میں سب ایک خوبصورت لڑی میں جمع ہوگئے ہیں۔ اگر ہم اتحاد و اتفاق کیساتھ معاملات پر ایک ہوجائیں تو حکومت اور انتظامیہ سمیت کسی میں ہمت نہیں ہوگی کہ علاقے کے مسائل پر سستی کا مظاہرہ کرے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
6 + 5 =