۲۶ فروردین ۱۴۰۳ |۵ شوال ۱۴۴۵ | Apr 14, 2024
مؤسسہ باقر العلوم

حوزه/ مجلسِ علمائے امامیہ پاکستان کے سربراہ نے کہا کہ طوفان الاقصیٰ کئی صہیونی منصوبوں، جیسے غاصب اسرائیل کا وجود اور اسرائیل کے ناجائز وجود کو تسلیم کرنے والوں کو جڑ سے ختم کرنے کے ساتھ ساتھ ان خائن حکمرانوں کو بھی نشان عبرت بنا دے گا، جنہوں نے فلسطینی کاز کے ساتھ خیانت کی۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، ایم ڈبلیو ایم پاکستان کے خارجہ امور کے سربراہ اور مجلسِ علمائے امامیہ پاکستان کے صدر حجت الاسلام والمسلمین ڈاکٹر سید شفقت حسین شیرازی نے طوفان الاقصیٰ کے بارے میں تبادلہ خیال کرتے ہوئے کہا کہ طوفان الاقصیٰ کئی صہیونی منصوبوں، جیسے غاصب اسرائیل کا وجود اور اسرائیل کے ناجائز وجود کو تسلیم کرنے والوں کو جڑ سے ختم کرنے کے ساتھ ساتھ ان خائن حکمرانوں کو بھی نشان عبرت بنا دے گا، جنہوں نے فلسطینی کاز کے ساتھ خیانت کی۔

تفصیلات کے مطابق، قم المقدسہ میں مؤسسہ باقر العلوم کے زیر اہتمام جاری ورکشاپ میں سیکرٹری امور خارجہ ایم ڈبلیو ایم نے شرکاء سے حالیہ فلسطین اسرائیل جنگ کے عنوان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جبھۃ المقاومت نے مشرق وسطیٰ میں طاقت کا توازن تبدیل کر کے رکھ دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بقول سید مقاومت اب مار کر بھاگنے کا وقت چلا گیا، بلکہ اب غاصب صہیونیوں کا مار کھانے کا وقت آگیا ہے اور حالیہ طوفان اقصیٰ آپریشن میں حماس و دیگر فلسطینی گروہوں کی کامیابی اس بات کا مظہر ہے۔

علاؤہ ازیں ایم ڈبلیو ایم کے امور خارجہ کے سربراہ نے کہا کہ اس آپریشن نے بہت سارے صہیونی منصوبوں کو خاک میں ملا دیا ہے خاص طور پر صدی کی ڈیل، اسرائیل کو تسلیم کرنے کا منصوبہ، انڈیا خلیج ریاض سے حیفا تک کے تجارتی روڈ کا منصوبہ، انہیں بھی جنہوں نے اسرائیل کو تسلیم کیا اور ان تمام خائن حکمرانوں کو بھی نشان عبرت بنا دے گا، جنہوں نے فلسطینی کاز کے ساتھ خیانت کی اور مقاومتی گروہوں کو کمزور کرنے کی کوشش کی۔

یاد رہے کہ حوزہ علمیہ قم المقدسہ میں نئے تعلیمی سال کے آغاز کے ساتھ مؤسسہ باقر العلوم میں بھی قلیل المدتی تربیتی اور فکری کورسز کا آغاز ہوچکا ہے۔ فی الحال 2 دورے، دین فطری اور بدترین آرزو کیلئے نام نویسی عمل میں لائی گئی ہے، جس میں طلاب کرام کی کثیر تعداد شریک ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .