۳ اردیبهشت ۱۴۰۳ |۱۳ شوال ۱۴۴۵ | Apr 22, 2024
علامہ مقصود

حوزہ / مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری تنظیم نے جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور میلاد امام جعفر صادق علیہ السلام کی مناسبت سے کنب ضلع خیرپور میں اتحاد بین المسلمین ریلی میں شرکت کی۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری تنظیم علامہ مقصود علی ڈومکی نے جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور میلاد امام جعفر صادق علیہ السلام کی مناسبت سے کنب ضلع خیرپور میں اتحاد بین المسلمین ریلی میں شرکت کی۔ انہوں نے مین چوک کنب میں جشن میلاد کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا: اللہ تعالیٰ نے پوری کائنات حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور ان کی آلِ پنجتن پاک (ع) کے صدقے میں خلق کی۔ وہ مخلوق اول اور وجہ تخلیق کائنات اور ہادی بشریت ہیں۔

انہوں نے کہا: وزارت تعلیم کی درسی کتب اور نئے متنازعہ یکساں قومی نصاب میں سید الانبیاء حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے متعلق اسباق میں شان رسالت کی توہین ناقابل قبول ہے۔ امت مسلمہ شیعہ اور سنی سب مل کر اس توہین رسالت کے خلاف مشترکہ مؤقف اختیار کریں۔ متنازعہ یکساں قومی نصاب کو 1975ء کے نصاب کے مطابق تشکیل دیا جائے۔

علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا: امت مسلمہ متحد ہو کر امریکہ، اسرائیل اور برطانیہ کی اسلام دشمن استکباری پالیسیوں کو ناکام بنا دے۔ دشمن کی تمام تر سازشوں کے باوجود آج بھی شیعہ سنی آپس میں متحد ہیں۔ رہبر کبیر بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی رحمۃ اللہ علیہ نے اپنی الہی بصیرت سے اسلام دشمن سامراجی قوتوں کے ناپاک عزائم خاک میں ملا دیئے۔

قابلِ ذکر ہے کہ اس موقع پر جامعہ امام علی علیہ السلام کنب کے پرنسپل علامہ محمد نقی حیدری نے خطبۂ استقبالیہ پیش کیا۔ تقریب سے علامہ سرفراز مہدی چانڈیو، اہل سنت کے رہنما ذوالفقار علی قادری اور عبدالستار قادری نے خطاب کیا اور بارگاہ رسالت میں نعت شریف کا ہدیہ پیش کیا۔

جشن کی اس تقریب میں ایم ڈبلیو ایم کے سابقہ صوبائی سیکرٹری تنظیم آغا منور جعفری، سید زین العابدین شاہ، برادر عمران شاہانی، سابقہ چیئرمین یونین کونسل رئیس نثار علی چانڈیو، اصغریہ آرگنائزیشن پاکستان کے فتح علی باقری و دیگر احباب شریک ہوئے۔

دشمن کی تمام تر سازشوں کے باوجود آج بھی شیعہ سنی آپس میں متحد ہیں، علامہ مقصود علی ڈومکی

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .