۱۶ آذر ۱۴۰۰ |۲ جمادی‌الاول ۱۴۴۳ | Dec 7, 2021
آیت الله اعرافی

حوزہ/ ایرانی دینی مدارس کے سربراہ نے کہا کہ حوزہ ہائے علمیہ اور رضاکاروں کا اصل مقصد و ہدف دنیا میں اسلامی فکر اور نظریے کا فروغ اور اسلامی تہذیب کو پروان چڑھانا ہے۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،ایرانی دینی مدارس کے سربراہ آیۃ اللہ علی رضا اعرافی نے آج دارالشفاء میں علماء طلباء اور اعلیٰ فوجی افسران کے ایک اجتماع سے خطاب کے موقع پر ہفتۂ بسیج کی مناسبت سے تبریک پیش کرتے ہوئے بسیج،انقلاب اور شہادت کے پرچم کو اٹھائے ہوئے تمام مکاتب،حوزہ ہائے علمیہ اور علماء کو خراج تحسین پیش کیا۔

حوزہ ہائے علمیہ ایران کے سربراہ نے بسیج کی خصوصیات بیان کرتے ہوئے مزید کہا بسیج کی اہم خصوصیات میں ایثار و قربانی،عقیدت،ایمان،جہاد اور اسلام کا دفاع سر فہرست ہے اور یہ بسیج کی پہلی ثقافت ہے۔

آیۃ اللہ اعرافی نے کہا کہ بسیج تمام خوبیوں کا مظہر اور نظریات کے دفاع کے جذبے سے سرشار ہے اور یہی بسیج کی بنیاد ہے۔بسیجی ایمان،جہاد اور دفاع کے قلعے میں اہم کردار کا حامل ہے اور مختلف میدانوں میں رضاکاروں کی شعوری اور دلیرانہ موجودگی قابل فخر ہے۔

اِمام جمعہ قم نے حوزہ ہائے علمیہ کے رضاکاروں کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ جب حوزہ ہائے علمیہ میں رضاکاروں کی بات آتی ہے تو علماء اور طلباء کو رضاکارانہ کاموں میں سب سے آگے ہونا چاہئے،حوزہ ہائے علمیہ سمیت دینی اور علمی مراکز کی فضاء میں بسیج کا کام انقلاب اسلامی کے جذبے اور شعور کا تحفظ اور اس سے خالص اسلامی فکر کو پروان چڑھانا ہونا چاہئے۔

آیۃ اللہ اعرافی نے مزید کہا کہ حوزہ ہائے علمیہ اور رضاکاروں کا کام آج کی دنیا پر حکومت کرنے کے لئے اسلامی فکر اور نظریے کا فروغ اور ایک نئی اسلامی تہذیب کی بنیاد ہونا چاہئے۔

ایرانی دینی مدارس کے سربراہ نے زور دے کر کہا کہ ایک منظر جسے میں کبھی نہیں بھول سکتا وہ یہ ہے کہ جب میں لبنان گیا تو میں نے دیکھا کہ بسیج اور حزب اللہ کی عظمت اور انقلاب اسلامی کے اقتدار نے اسرائیل کی سرحدوں اور دشمنوں کو بھی ہلا کر رکھ دیا ہے۔

انہوں نے رضاکاروں کے خلوص کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے رضاکاروں میں عزم زیادہ اور توقعات کم ہیں اور انہوں نے اسلام اور الٰہی نظریات سے متعلق خود کو وقف کیا ہوا ہے،یکجہتی اور بروقت مؤثر اقدامات اٹھانا بسیجی ثقافت کی خصوصیات ہیں اور یہ اتحاد اور ہم آہنگی دشمنوں کے ناپاک عزائم کو خاک میں ملا دیتی ہے۔

اِمام جمعہ قم نے کہا کہ دفاعِ مقدس میں بسیجی ثقافت طاغوت کو سرنگوں کرنے کے بعد دنیا میں ایک اہم اور منفرد نمونہ بن چکی ہے۔

آیۃ اللہ اعرافی نے مزید کہا کہ دفاع مقدس کی ثقافت اور بسیجی جذبے نے دنیا کے کئی ممالک میں اپنا کردار ادا کرتے ہوئے مزاحمتی اور مقاومتی محاذوں کو تشکیل دیا ہے۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
2 + 8 =