۲۵ مرداد ۱۴۰۱ |۱۸ محرم ۱۴۴۴ | Aug 16, 2022
علامہ شبیر میثمی

حوزہ/ شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل: عزاداروں پر ایف آئی آرز کا سلسلہ بند ہونا چاہیے بصورت دیگر اس کے خلاف بھرپور احتجاج کیا جائے گا۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،راولپنڈی/ شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ڈاکٹر شبیر حسن میثمی نے کہا ہے کہ عزاداری سید الشہداء مذہبی اور شہری آزادیوں کا مسلہ جس پر کوئی قدغن قبول نہیں کی جا سکتی۔ عزاداروں پر ایف آئی آرز کا سلسلہ بند ہونا چاہیے بصورت دیگر اس کے خلاف بھرپور احتجاج کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے روالپنڈی میں شیعہ علماء کونسل پاکستان تحصیل راولپنڈی کی دعوت پر کارکنوں کی تعارفی نشت سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات زاہد علی آخونزادہ، صوبہ شمالی پنجاب کے آرگنائزر علامہ سید اصغر یزدانی، علامہ فرحت عباس جوادی، سید اصغر بخاری, حاجی انصار حیدر، سید محمود نقوی، سید نیئر عباس نقوی اور دیگر علماء کرام و سینئر عمائدین کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔

علامہ ڈاکٹر شبیر حسن میثمی نے کہا کہ ملک میں امن و امان کی صورتحال محرم الحرام سے قبل ایک بار پھر مخدوش کرنے کی کوشش کی گئی۔ اور سانحہ پشاور کے بعد پاراچنار میں کشیدگی اس امر کا بین ثبوت ہے۔ انہوں کہا کہ پہلے نصاب میں تبدیلی کر کے ملک کے پرامن ماحول کو ثبوتاز کرنے کی کوشش کی اور پھر ہے در دہشت گردی واقعات سے صورتحال کو کشیدہ کیا جا رہا ہے جو قانون نافذ کرنے والے اداروں پر اب تک سوالیہ نشان ہیں۔

انہوں نے واضح کیا پشاور کی جامع مسجد کوچہ رسالدار میں خود کش حملے میں تحقیقات کے حوالے سے اب تک ورثاء شہداء کے مطالبات کو تسلیم نہ کرنا حکومتوں کی ظالمانہ روش اور بے حسی کا مظہر ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے انہوں نے ورثاء شہداء کی جانب سے سانحہ کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن کے مطالبہ حق بجانب قرار دیتے ہوئے اس پر فوری عملدرآمد کا مطالبہ بھی کیا۔

انہوں مزید کہا کہ عزاداری سید الشہداء پر ایف آئی آرز بنیادی شہری آزادیوں کے قوانین کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے اور ہم نے ملک بھر میں ایسی ایف آئی آرز کے حوالے حکومتوں کو متنبہ کر دیا ہے کہ وہ فوری ان ایف آئی آرز کو واپس لے اور آمدہ محرم میں ایسے اقدامات سے گریز کرے جس سے عوام میں بے چینی پھیلے۔

انہوں نے کہا کہ اگر ایف آئی آرز کا یہ غیر قانونی اقدام نہ روکا کیا گیا تو اس کا خلاف قانونی حق بھی استعمال کریں گے اور احتجاج بھی کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ قائدِ ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی وطن عزیز میں اتحاد امت کے بانیوں میں سے ہیں جنہوں ہمیشہ ملت جعفریہ کو پرامن رہنے کی تلقین کی ہے۔ تاہم انہوں کارکنوں کو قائدِ محترم کی کسی بھی کال کے لیے تیار رہنے کی ہدایت کی اور آپس میں اتحاد و اتفاق سے اپنے حقوق کی جدوجہد کو آگے بڑھانے کی اپیل کی۔

اس موقع پر شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات زاہد علی آخونزادہ اور صوبائی آرگنائزر علامہ سید اصغر یزدانی سمیت دیگر علماء نے بھی خطاب کیا۔ قبل ازیں مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ڈاکٹر شبیر حسن میثمی کی آمد پر کارکناں تحریک نے زبردست نعروں اور گلپاشی کر کے مہمانوں کا پرتپاک استقبال کیا۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
5 + 3 =