۴ مهر ۱۴۰۰ |۱۸ صفر ۱۴۴۳ | Sep 26, 2021
پاکستان

حوزہ/مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام اسلام آباد، لاہور، کراچی، کوئٹہ، پشاور، ملتان، آزادکشمیر اور گلگت بلتستان سمیت ملک کے مختلف شہروں میں القدس ریلیاں نکالی گئیں۔ جن کا مقصد کشمیر، فلسطین اور یمن سمیت دنیا بھر کے مظلوموں کی حمایت اور طاغوتی طاقتوں سے نفرت و بیزاری کا اظہار کرنا تھا۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام اسلام آباد، لاہور، کراچی، کوئٹہ، پشاور، ملتان، آزادکشمیر اور گلگت بلتستان سمیت ملک کے مختلف شہروں میں القدس ریلیاں نکالی گئیں۔ جن کا مقصد کشمیر، فلسطین اور یمن سمیت دنیا بھر کے مظلوموں کی حمایت اور طاغوتی طاقتوں سے نفرت و بیزاری کا اظہار کرنا تھا۔ریلیوں کی قیادت ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی و صوبائی قائدین نے کی۔یوم القدس کی مرکزی ریلی کا آغاز امام بارگاہ اثنا عشری جی سکس ٹو اسلام آباد سے ہوا جس کی قیادت مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری اور امامیہ اسٹوڈینس آرگنائزیشن راولپنڈی ڈویژن کے رہنماوں نے کیا ۔

ریلی میں ایس او پیز پر پوری طرح عمل کرتے ہوئے شرکاء نے ضروری فاصلہ برقرار رکھا۔ریلی کے شرکائ  نے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر اسرائیل، امریکہ اور بھارت کے خلاف نعرے درج تھے۔شرکاءنے استکباری قوتوں کے خلاف فلک شگاف نعرے بھی لگائے۔اس موقعہ پر امریکی صدر ٹرمپ اور اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہوکے پتلے بھی نذر آتش کیے گئے۔

ریلی سے خطاب کرتے ہوئے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا القدس مسلمان حکمرانوں کی ہمدردیاں جانچنے کا بہترین پیمانہ ہے۔جن مسلم حکمرانوں کے دل میں اسلام کا درد ہے وہ قدس پر بے چین و بے قرار ہیں اور جو مسلمان قبلہ اول پر طاغوتی قبضے سے لاتعلقی ظاہر کر رہے ہیں انہوں نے محض اسلام کا لبادہ اوڑھ رکھا ہے۔ان کے دل یہود ونصاریٰ کے لیے دھڑکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ فلسطین، کشمیر اور یمن سمیت دنیا بھر کے مظلومین کے لیے آواز بلند کرنا ہم سب کی شرعی اوراخلاقی ذمہ داری ہے۔قدس سے ہماری روح ہماری سانس کا رشتہ ہے۔القدس پر مسلمانوں کا حق ایک اٹل حقیقت ہے جسے کوئی بھی باشعور انسان جھٹلا نہیں سکتا۔مسئلہ فلسطین پر خاموشی صیہونیت کو تقویت دینے کے مترادف ہے۔امسلمانوں کے قبلہ اول پر صیہونیوں کے قبضے کے خلاف آج پوری دنیا میں آواز بلند ہو رہی ہے۔ کشمیر و فلسطین کا تنازع محض کسی زمین کے ٹکڑے کے حصول کے لیے نہیں بلکہ ایک تاریخی حقیقت کو جھٹلانے اور نہتے مسلمانوں پر یہود و ہنود کی ظالمانہ کارروائیوں کی راہ میں رکاوٹ بننے کے لیے ہے۔عالم اسلام کو دنیا بھر کے مظلومین کی حمایت میں دو ٹوک موقف اختیار کرنا ہو گا۔انہوں نے کہا یہ امر انتہائی افسوس ناک ہے کہ آج کشمیر،فلسطین،یمن اور بحرین سمیت ہر طرف صرف مسلمانوں کا لہو بہہ رہا ہے۔ آئی ایس او کے ڈویژنل رہنما معمر عباس نے کہ کہ اسرائیل کے ناسور کا واحد حل اس کا خاتمہ ہے جس طرح دنیا بھر کے انسان کرونا وائرس کے تدارک کے لئے متحدہ حکمت عملی اختیار کررہے ہیں اس طرح دنا بھر کے مسلمانوں کو کرونا سے زیادہ خطرناک صہیونی وائرس کے لئے مشترکہ لائحہ عمل اپنانا چاہئے ۔ 


ریلی سے ملی یکجہتی کے ڈپٹی سیکرٹری ثاقب اکبر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملی یکجہتی کونسل شیعہ سنی کی مشترکہ جماعت ہے جو اسرئیلی اقدامات کی بھرپور مذمت کرتی ہے انہوں نے کہا کہ مسلمانوں نے اپنی عملی زندگی میں اللہ تعالیٰ کی اطاعت کی بجائے دنیاوی خداو ¿ں کی پیروی شروع کر رکھی ہے۔عالم اسلام کی بربادی کی اصل وجہ یہی ہے۔انہوں نے کہا حق وباطل کے جدا جدا ہونے کا اب وقت آگیا ہے۔عالم اسلام کو اب ایک دوسرے کا بازو بننا ہو گا۔ ریلی سے شیعہ علما کونسل کے ضلعی سیکرٹری نیئر عباس نے اپنے خطاب میں کہا کہ امت مسلمہ کی مشکلات پر خاموش تماشائی کا کردار ادا کرنے والے مسلمان حکمرانوں کو تاریخ کبھی معاف نہیں کرے گی۔انہوں نے کہ قبلہ اول پوری مسلمہ امہ کا مشترکہ مسئلہ ہے اس ہر عالم اسلام کو یک زبان ہونا ہو گا۔ریلی سے انجمن جانثاران اہلیبت کے ذاہد جعفری نے بھی خطاب کیا۔
ریلی میں مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما نثار علی فیضی علامہ اقبال بہشتی ،ملک اقرار ،سمیت سینکڑوں کارکنان نے شرکت کی۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
7 + 7 =