۷ مرداد ۱۴۰۰ | Jul 29, 2021
مولانا کلب جواد نقوی

حوزہ/مجلس علمائے ہند کے جنرل سکریٹری نے کہاکہ پوری دنیا میں شیعوں کی منظم نسل کشی کا سلسلہ جاری ہے مگر تمام حقوق انسانی کی تنظیمیں ،سیکولر ممالک ،اور اقوام متحدہ خاموش ہے ۔ہمارا ملک ہندوستان بھی اس سلسلے میں احتجاج نہیں کرتا یہ افسوس ناک ہے ۔

حوزہ نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق،لکھنؤ/ماہ مبارک رمضان میں افغانستان کی راجدھانی کابل میں معصوم بچوں کے اسکول میں ہوئے دہشت گردانہ حملے کی مذمت کرتے ہوئے مجلس علمائے ہند کے جنرل سکریٹری مولانا سیدکلب جواد نقوی نے کہاکہ ماہ رمضان المبارک میں معصوم بچوں کے اسکول پر دہشت گردانہ حملہ یزیدی افکار کی پیروی کا نتیجہ ہے،یہ لوگ اللہ اور اسلام کے کھلے ہوئے دشمن ہیں ۔ہم اس دہشت گردانہ حملے کی سخت مذمت کرتے ہیں اور حملے میں شہید ہوئیں معصوم بچیوںکے اہل خانوادہ کی خدمت میں تعزیت و تسلیت پیش کرتے ہیں ۔

مولانانے کہاکہ پوری دنیا میں شیعوں کی منظم نسل کشی کا سلسلہ جاری ہے مگر تمام حقوق انسانی کی تنظیمیں ،سیکولر ممالک ،اور اقوام متحدہ خاموش ہے ۔ہمارا ملک ہندوستان بھی اس سلسلے میں احتجاج نہیں کرتا یہ افسوس ناک ہے ۔

مولانانے کہاکہ شیعوں کی منظم نسل کشی پر عالم اسلام بھی خاموش ہے ۔ہندوستان سمیت پور ی دنیا سے شیعوں کے قتل عام کی مذمت میں کسی مولوی اور مفتی کا بیان تک نہیں آتا ۔مگر جب یوروپی ممالک میں دہشت گردانہ حملے ہوتے ہیں تو تمام مسلمان مولوی مذمتی بیان جاری کرنے لگتے ہیں ۔مولانانے کہاکہ شیعوں کی نسل کشی پر عالم اسلام اور مسلمان مولویوں کی مجرمانہ خاموشی قابل مذمت ہے ۔جب ان پر ظلم ہوتاہے تو یہ اپنی مظلومیت کا نوحہ پڑھتے ہیں کہ ہمیں مارا جارہاہے ،ہم پر ظلم ہورہاہے ۔لیکن جب نام نہاد مسلمان دہشت گردتنظیمیں شیعوں کا قتل عام کرتی ہیں تو ان کی طرف سے مذمت تک نہیں کی جاتی ۔

مولانانے کہا کہ ہم نے ہمیشہ ظلم کے خلاف احتجاج کیاہے خواہ وہ ظلم فلسطین میں ہورہاہو یا میانمار اور دیگر ممالک میں ۔مگر عالم اسلام اور مسلمان مولوی شیعوں کی منظم نسل کشی پر خاموش رہتے ہیں جو انتہائی افسوس ناک اور قابل مذمت ہے ۔

مولانانے کہاکہ ماہ رمضان المبارک میں معصوم بچوں اور بے گناہوں پر دہشت گردانہ حملہ بتلا رہاہے کہ یہ لوگ اللہ کے دشمن اور یزی نسل سے تعلق رکھتے ہیں ۔جس طرح کربلا کے میدان میں یزیدی فوج نے چھ مہینے کے بچے حضرت علی اصغر ؑ کی گردن پرتیر مارکر شہید کردیا تھا اسی طرح آج   یزید ی نسل سے تعلق رکھنے والے دہشت گرد معصوم بچوں کو بے رحمی کے ساتھ قتل کررہے ہیں ۔

لیبلز

تبصرہ ارسال

You are replying to: .
3 + 5 =